29.9 C
Karachi
Saturday, February 24, 2024

اقوام متحدہ اور او آئی سی سے قرارداد پاس کرادیں، الیکشن 8 فروری کو ہی ہوں گے: بلاول

ضرور جانیے

پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ اگر اقوام متحدہ اور اسلامی تعاون تنظیم (او آئی سی) نے قرارداد منظور نہیں کی تو بھی انتخابات 8 فروری کو ہوں گے۔

این اے 127 لاہور کے علاقے ماڈرن کالونی میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ یہ تاثر دیا جاتا ہے کہ لاہور میں دودھ اور شہد کی ندیاں بہتی ہیں۔ یہاں توجہ عوام کے مسائل پر نہیں بلکہ اشرافیہ پر ہے۔

انہوں نے کہا کہ پیپلز پارٹی مساوات کی سیاست پر یقین رکھتی ہے، ہم ملک میں آزادانہ اور منصفانہ انتخابات کرانے کے حق میں ہیں۔

انہوں نے کہا کہ پی پی کے کے این ایف سی ایوارڈ کی وجہ سے شہباز شریف لاہور میں کام کر سکتے ہیں۔

ایک سوال کے جواب میں بلاول بھٹو زرداری کا کہنا تھا کہ (ن) لیگ اور پی ٹی آئی الیکشن اس لیے لڑ رہی ہیں تاکہ ان کے رہنما اور بانی جیل سے بچ سکیں۔

ذاتی ایجنڈا

انہوں نے کہا کہ میرے دادا نے لاہور میں پیپلز پارٹی کی بنیاد رکھی، میں اپنے سیاسی سفر کا آغاز لاہور سے کر رہا ہوں، (ن) لیگ اور پی ٹی آئی کا ذاتی ایجنڈا ہے جبکہ میرا ایجنڈا عوامی ہے۔

الیکشن کے حوالے سے چیئرمین پی پی کا کہنا تھا کہ اگر اقوام متحدہ اور او آئی سی قرارداد منظور نہ بھی کریں تو بھی انتخابات 8 فروری کو ہوں گے۔ شفاف اور غیر جانبدارانہ انتخابات ہونے چاہئیں۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ وہ اس الیکشن میں الیکشن لڑیں گے، ماضی میں جنرل ضیاء اور حمید گل نے پنجاب پر سیاسی جماعتیں مسلط کیں۔

واضح رہے کہ گزشتہ روز سینیٹ نے فاٹا سے آزاد رکن دلاور خان کی جانب سے الیکشن ملتوی کرنے کے حوالے سے جمع کرائی گئی قرارداد منظور کی تھی۔

قرارداد کی منظوری کے وقت ایوان بالا میں صرف 14 ارکان موجود تھے جن میں سے صرف مسلم لیگ (ن) کے سینیٹر افنان اللہ نے قرارداد کی مخالفت کی جبکہ پی ٹی آئی کے سینیٹر گردیپ سنگھ اور پیپلز پارٹی کے بہرام نڈ تنگی خاموش رہے۔

دونوں ممبران کو ان کی جماعتوں کی جانب سے شوکاز بھی جاری کیے گئے ہیں۔

پسندیدہ مضامین

سیاستاقوام متحدہ اور او آئی سی سے قرارداد پاس کرادیں، الیکشن 8...