25.9 C
Karachi
Friday, April 19, 2024

رمضان المبارک میں حملے روکنے سے اسرائیل نے انکار کردیا، بائیڈن کے دعوے دھرے رہ گئے

ضرور جانیے

رمضان المبارک کی آمد کے باوجود اسرائیل نے رفح سرحد پر جنوبی غزہ میں فوجی کارروائی کرنے سے انکار کر دیا ہے۔

اسرائیل کے وزیر خارجہ بینجمن نیتن یاہو نے کہا ہے کہ حماس کو شکست دینے کے لیے رفح سرحدی علاقے میں ایک جامع اور جامع آپریشن ضروری ہے۔

واضح رہے کہ امریکی صدر جو بائیڈن نے اسرائیل کو رمضان کے دوران رفح میں آپریشن کے خلاف خبردار کیا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ رمضان کے دوران رفاہ سرحدی علاقے میں آپریشن کو ریڈ لائن عبور کرنے کے مترادف سمجھا جائے گا۔

اسرائیلی وزیر اعظم نے دعویٰ کیا ہے کہ غزہ میں ہلاک ہونے والوں میں حماس کے 13 ہزار کارکن بھی شامل ہیں۔

واضح رہے کہ غزہ کی نصف سے زائد آبادی نے رفح سرحد سے متصل علاقے میں پناہ لے رکھی ہے۔

7 اکتوبر کو حماس نے اسرائیل پر حملوں میں 1200 افراد کو ہلاک اور 253 کو یرغمال بنا لیا تھا۔

اسرائیل کی جوابی کارروائیوں میں اب تک 31 ہزار سے زائد فلسطینی شہید ہو چکے ہیں جن میں اکثریت خواتین اور بچوں کی ہے۔

جنگ بندی کے حوالے سے امریکہ اور یورپ کی کوششیں اب تک کامیاب نہیں ہو سکی ہیں۔ خیال کیا جا رہا تھا کہ رمضان کے دوران کوئی لڑائی نہیں ہوگی اور اس حوالے سے سعودی عرب، ترکی، امریکا اور یورپ کی کوششیں رنگ لائیں گی لیکن ایسا ہوتا دکھائی نہیں دے رہا۔

پسندیدہ مضامین

انٹرنیشنلرمضان المبارک میں حملے روکنے سے اسرائیل نے انکار کردیا، بائیڈن کے...