25.9 C
Karachi
Friday, April 19, 2024

فری لانسرز کی سہولت کیلئے ای روزگار سینٹرز کے قیام کا فیصلہ

ضرور جانیے

نگران وفاقی حکومت نے فری لانسرز کی سہولت کے لیے 10 ہزار ای ایمپلائمنٹ سینٹرز قائم کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

فری لانسرز کی سہولت کے لیے 10 ہزار ای ایمپلائمنٹ سینٹرز کے قیام کا اعلان جمعرات کو کیا جائے گا۔ وفاقی وزیر آئی ٹی ڈاکٹر عمر سیف نے کہا ہے کہ پاکستان میں 15 لاکھ فری لانسرز باقاعدگی سے کام کر رہے ہیں، ان میں سے زیادہ تر فری لانسرز کو مطلوبہ سہولیات حاصل ہیں۔

انہوں نے کہا کہ تمام سہولیات سے آراستہ ہرائی ایمپلائمنٹ سینٹر میں 100 افراد کی گنجائش ہوگی، ہر سینٹر میں 100 ورکنگ اسٹیشن ہوں گے، یعنی 10 لاکھ فری لانسرز ہوں گے۔ یہ 10 لاکھ فری لانسرز سالانہ 10 ارب ڈالر مالیت کا زرمبادلہ کما سکیں گے۔

نگران حکومت میں وزارت آئی ٹی و ٹیلی کمیونیکیشن کے کامیاب ترین 4 ماہ رہے، انفارمیشن اور ٹیلی کمیونیکیشن کے شعبے کے فروغ کے لیے 13 انقلابی اقدامات کیے گئے۔

ڈاکٹر عمر سیف نے مزید کہا کہ چار ماہ کے قلیل عرصے میں ایس آئی ایف سی کے مکمل تعاون سے اقدامات ممکن ہوئے۔ ان اقدامات سے عوام کو براہ راست فائدہ پہنچے گا اور ملک میں بڑی سرمایہ کاری کی راہ ہموار ہوگی۔

واضح رہے کہ تین ماہ قبل اسٹیٹ بینک آف پاکستان کی جانب سے آئی ٹی ایکسپورٹرز اور فری لانسرز کے لیے سہولت کا انکشاف کیا گیا تھا۔ پاکستان کے مرکزی بینک نے برآمدی آمدنی کو غیر ملکی کرنسی اکاؤنٹس میں رکھنے کی حد 35 سے بڑھا کر 50 فیصد کردی تھی۔

اعلان میں کہا گیا ہے کہ آن لائن ادائیگیوں کے لئے برآمد کنندگان کو ڈیبٹ کارڈ جاری کیے جائیں گے جبکہ فری لانسرز کم سے کم دستاویزی ضروریات کے ساتھ ڈیجیٹل یا نارمل اکاؤنٹ کھول سکیں گے۔

برآمد کنندگان کے خصوصی فارن کرنسی اکاؤنٹس بنیادی اکاؤنٹ کے ساتھ کھولے جائیں گے۔ فری لانسرز کو ان اکاؤنٹس میں برآمدی آمدنی کا 50 فیصد یا 5،000 ڈالر ماہانہ رکھنے کی اجازت ہے۔ فری لانسرز بینکوں سے پیشگی منظوری کے بغیر ان اکاؤنٹس سے ادائیگی کرسکتے ہیں۔

پسندیدہ مضامین

ٹیکنالوجیفری لانسرز کی سہولت کیلئے ای روزگار سینٹرز کے قیام کا فیصلہ