29.9 C
Karachi
Sunday, May 19, 2024

پختونخوا حکومت کاشتکاروں سے 29 ارب روپے کی گندم خریدنے کیلیے تیار

ضرور جانیے

پشاور: خیبرپختونخوا حکومت کل سے کاشتکاروں سے 29 ارب روپے مالیت کی گندم کی خریداری شروع کرے گی۔

صوبائی وزیر خوراک ظاہر شاہ تورو نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ خیبر پختونخوا حکومت تقریبا 29 ارب روپے کی لاگت سے 7 مئی سے 3 لاکھ میٹرک ٹن گندم کی خریداری شروع کرے گی۔ مقامی کاشتکاروں سے گندم 3900 روپے فی 40 کلو کے حساب سے خریدی جائے گی۔

انہوں نے کہا کہ گندم کے معیار اور مقدار کو چیک کرنے کیلئے ضلعی سطح پر کمیٹیاں تشکیل دی گئی ہیں جن میں ڈسٹرکٹ فوڈ کنٹرولر، اسسٹنٹ فوڈ کنٹرولر، ضلعی انتظامیہ، زراعت، محکمہ ریونیو، فلور ملز ایسوسی ایشن اور محکمہ نیب کے نمائندہ اراکین اور اینٹی کرپشن حکام مبصرین کے طور پر شامل ہوں گے۔

ظاہر شاہ تورو نے اپنے بیان میں مزید کہا کہ صوبے کے 22 گودام گندم خریداری مراکز کے طور پر قائم کیے گئے ہیں۔ پشاور، ڈی آئی خان، بنوں، مالاکنڈ درگئی، دیر لوئر، ہنگو، لکی مروت، مردان، ہری پور، مانسہرہ، کرک، بٹگرام، کوہاٹ، ایبٹ آباد، نوشہرہ، چارسدہ، چترال اپر، چترال لوئر، ازاخیل، بونیر، صوابی۔ اور سوات میں شاپنگ سینٹرز ہوں گے جہاں خریداری کے عمل کی نگرانی کے لیے سی سی ٹی وی کیمرے نصب کیے گئے ہیں۔

صوبائی وزیر نے کہا کہ کاشتکاروں سے پہلے آؤ پہلے دیکھو کی بنیاد پر خریداری کی جائے گی۔ اس سلسلے میں ایک پروکیورمنٹ ایپ بھی متعارف کرائی گئی ہے جس کے ذریعے تمام ریکارڈ ز آن لائن آن لائن انٹری اور بینک آف خیبر کے ذریعے کسانوں کو 24 گھنٹوں کے اندر ادائیگی ممکن ہو سکے گی۔

انہوں نے کہا کہ کسی بھی شکایت کے لئے ٹیلی فون نمبر 091-9225379 پر ایک شکایت سیل بھی قائم کیا گیا ہے۔ گندم کی خریداری میں شفافیت کو یقینی بنانے اور کسی بھی قسم کے فراڈ کی روک تھام کے لئے ہر ممکن اقدامات کئے گئے ہیں۔ کرپشن میں ملوث ہونے پر مثالی سزا دی جائے گی۔

پسندیدہ مضامین

پاکستانپختونخوا حکومت کاشتکاروں سے 29 ارب روپے کی گندم خریدنے کیلیے تیار