30.9 C
Karachi
Tuesday, April 23, 2024

لیبیا میں سیلاب سے ہلاکتوں کی تعداد 20 ہزار تک ہوسکتی ہے؛ میئرعبدالمنعم

ضرور جانیے

طرابلس: لیبیا میں سیلاب سے تباہ ہونے والے شہر درنا کے میئر عبدالمنیم الغیثی نے کہا ہے کہ امدادی کارروائیوں کے دوران اب بھی لاشیں مل رہی ہیں اور ہمارے اندازے کے مطابق ہلاکتوں کی تعداد 18 ہزار سے 20 ہزار تک ہوسکتی ہے۔

العربیہ نیوز کو دیے گئے ایک انٹرویو میں لیبیا کے شہر درنا کے میئر عبدالمنیم الغیثی نے امدادی کاموں اور سیلاب سے ہونے والے نقصانات کے بارے میں آگاہ کرتے ہوئے کہا کہ 5 ہزار سے زائد لاشیں مل چکی ہیں جبکہ اصل تعداد دگنی ہے کیونکہ ان میں سے زیادہ تر کو رشتہ داروں نے خود ہلاک کیا۔ دفن کیا گیا ہے اور ہمارے پاس اس کا کوئی ریکارڈ نہیں ہے۔

میئر عبدالمنیم الغیثی کے مطابق حکومت کے پاس 10 ہزار سے زائد افراد کی گمشدگی کے شواہد موجود ہیں لیکن اصل تعداد اس سے کہیں زیادہ ہے۔ ہمارا اندازہ ہے کہ ہلاکتوں کی تعداد 18،000 سے 20،000 ہوسکتی ہے۔

یاد رہے کہ وزارت داخلہ کے ترجمان لیفٹیننٹ طارق الخراز نے گزشتہ روز میڈیا کو بتایا تھا کہ اب تک 3 ہزار 840 ہلاکتیں ہوچکی ہیں جن میں 400 غیر ملکی بھی شامل ہیں۔

دوسری جانب شہری ہوا بازی کے وزیر حکیم ابو چکوت نے خبر رساں ادارے روئٹرز کو بتایا کہ ہلاکتوں کی تعداد 5 ہزار سے زائد ہے تاہم اس تعداد کو دوگنا کیا جا سکتا ہے۔

دوسری جانب گزشتہ رات مقامی ٹیلی ویژن نے ہلاکتوں کی تعداد 7 ہزار سے زائد اور لاپتہ افراد کی تعداد 15 ہزار کے قریب بتائی۔

واضح رہے کہ لیبیا کے شہر درنا میں مسلسل بارش وں کے باعث دو ڈیم ٹوٹ گئے اور سیلابی پانی رہائشی علاقے میں داخل ہوگیا۔ ریلا اتنا طاقتور تھا کہ اس نے اپنے راستے میں کئی رہائشی عمارتوں کو تباہ کر دیا۔

پسندیدہ مضامین

انٹرنیشنللیبیا میں سیلاب سے ہلاکتوں کی تعداد 20 ہزار تک ہوسکتی ہے؛...