29.9 C
Karachi
Thursday, June 13, 2024

لاہور کی انسداد دہشت گردی عدالت سے عمر سرفراز چیمہ کی اہلیہ گرفتار

ضرور جانیے

لاہور:- لاہور کی انسداد دہشت گردی کی عدالت میں سابق گورنر پنجاب عمر سرفراز چیمہ کی اہلیہ رابعہ سلطان کو گرفتار کر لیا گیا۔

پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے رہنما کو جوڈیشل ریمانڈ ختم ہونے کے بعد آج عدالت میں پیش کیا گیا۔ چیمہ کی اہلیہ اپنے شوہر سے ملنے کے لیے اے ٹی سی میں موجود تھیں۔

گرفتاری کے بعد پولیس ذرائع نے جیو نیوز کو بتایا کہ سلطان جناح ہاؤس حملہ کیس میں تفتیش کے لیے مطلوب تھا۔ انہوں نے دعویٰ کیا کہ سابق گورنر کی اہلیہ 9 مئی کو جناح ہاؤس میں موجود تھیں۔

تفتیشی حکام کا کہنا ہے کہ جیو فینسنگ سے ظاہر ہوتا ہے کہ رابعہ سلطان 9 مئی کو جناح ہاؤس میں موجود تھیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ پولیس کافی عرصے سے سلطان کی تلاش میں تھی۔

چیئرمین عمران خان

یاد رہے کہ 9 مئی کو پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے چیئرمین عمران خان کو اسلام آباد ہائی کورٹ کے احاطے سے گرفتار کیا گیا تھا۔ ان کی گرفتاری کے بعد ملک بھر میں مظاہرے دیکھنے میں آئے۔

پی ٹی آئی سربراہ کی گرفتاری سے مشتعل پارٹی کارکنوں اور حامیوں نے مبینہ طور پر سرکاری اور فوجی تنصیبات پر دھاوا بول دیا۔

تشدد پر قابو پانے کے لیے حکومت نے فوج طلب کی اور اعلان کیا کہ مظاہرین کے خلاف فوجی قوانین کے تحت مقدمہ چلایا جائے گا۔

ملک بھر میں کریک ڈاؤن کے دوران پی ٹی آئی کے کارکنوں اور رہنماؤں کی بڑی تعداد کو گرفتار کیا گیا ہے۔

چیمہ پی ٹی آئی کے ان چند رہنماؤں میں سے ایک تھے جنہیں تشدد کے بعد گرفتار کیا گیا تھا اور وہ کئی سیاست دانوں کے پارٹی میں شامل ہونے کے باوجود پارٹی کا حصہ رہے ہیں۔

ان رہنماؤں میں سے کئی پی ٹی آئی کی پچھلی حکومت کے دوران اعلیٰ عہدوں پر فائز رہے۔ فواد چوہدری، فیاض الحسن چوہان، فردوس عاشق اعوان، علی زیدی، عمران اسماعیل، عامر محمود کیانی، سردار تنویر الیاس، محمود باقی مولوی اور مراد راس جیسے رہنما جنہوں نے 9 مئی کے واقعے کے بعد پارٹی سے اختلافات کے بعد پی ٹی آئی چھوڑ دی تھی، جہانگیر ترین کی قیادت والی تحریک پاکستان پارٹی (آئی پی پی) میں شامل ہوگئے ہیں۔

پسندیدہ مضامین

سیاستلاہور کی انسداد دہشت گردی عدالت سے عمر سرفراز چیمہ کی اہلیہ...