15.9 C
Karachi
Thursday, February 22, 2024

غزہ پر صیہونی حملے جاری : 24 گھنٹوں میں مزید 297 سےزائد فلسطینی شہید

ضرور جانیے

غزہ: بے رحم اسرائیلی فوج فلسطینیوں پر مظالم کا سلسلہ بند نہ کرسکی، غزہ پر صیہونی حملے جاری ہیں اور ایک دن میں 297 سے زائد فلسطینی شہید ہوئے جس کے بعد اسرائیلی بربریت کے باعث شہید ہونے والوں کی مجموعی تعداد 18 ہزار سے زائد ہوگئی ہے۔7 اکتوبر سے غزہ پر اسرائیلی حملوں میں بڑی تعداد میں بچے ہلاک ہو چکے ہیں جبکہ ان حملوں میں 48 ہزار سے زائد افراد زخمی ہو چکے ہیں۔

اسرائیل نے اپنی جارحانہ کارروائیوں میں بین الاقوامی قوانین کی خلاف ورزی کی، اسکولوں، اسپتالوں، رہائشی عمارتوں، عبادت گاہوں کو تباہ کیا، خان یونس، رفاہ، جبالیہ اور دیگر علاقوں پر حملوں میں متعدد افراد ملبے تلے دب گئے۔میڈیا رپورٹس کے مطابق اسرائیلی فوج نے فلسطینیوں کے جبری انخلا کے منصوبے کے تحت خان یونس سے علاقہ خالی کرانے کی دھمکی دی۔

قومی سلامتی کے مشیر

اسرائیل کے قومی سلامتی کے مشیر ذکی حنگبی کا کہنا تھا کہ اسرائیلی فورسز کی حالیہ کارروائیوں میں نمایاں کامیابیاں حاصل ہوئی ہیں، اسرائیلی فورسز نے حماس کے 7 ہزار سے زائد جنگجوؤں کو نشانہ بنایا ہے۔اقوام متحدہ کے مطابق غزہ میں 23 لاکھ سے زائد فلسطینی پہلے ہی بے گھر ہیں اور جنگ زدہ شہر میں ایک جگہ سے دوسری جگہ پناہ لینے پر مجبور ہیں۔

عرب میڈیا کے مطابق اسرائیلی میڈیا نے اطلاع دی ہے کہ غزہ کی پٹی میں لڑائی کے دوران مزید کئی اسرائیلی فوجی ہلاک ہوئے ہیں۔ مرنے والوں میں ایک اسرائیلی وزیر کا بیٹا اور اس کا بھتیجا بھی شامل ہے۔عرب میڈیا رپورٹس کے مطابق اسرائیلی فوج نے غزہ کی پٹی میں اپنے پانچ فوجیوں کی ہلاکت کا اعتراف کیا ہے جس کے بعد غزہ کی پٹی میں زمینی کارروائیوں کے آغاز کے بعد سے اب تک ہلاک ہونے والے فوجیوں کی مجموعی تعداد 97 ہوگئی ہے۔

القسام بریگیڈ

دوسری جانب القسام بریگیڈ کا کہنا ہے کہ اس کے جنگجوؤں نے الزیتون کے علاقے میں ایک عمارت کو دھماکے سے اڑا دیا جہاں اسرائیلی فوجی چھپے ہوئے تھے۔ اس حملے میں کئی اسرائیلی فوجی ہلاک اور زخمی ہوئے تھے۔ غزہ میں جنگ بندی کی قرارداد کو ویٹو کرنے کے امریکی اقدام کی متحدہ عرب امارات، چین، فلسطین، برازیل، روس اور ترکی نے مذمت کی ہے۔ اس کے جواب میں اقوام متحدہ میں برازیل کے سفیر نے کہا کہ ویٹو سے سفارتی حل کو ناقابل تلافی نقصان پہنچے گا۔ روس نے غزہ کی جنگ کو امریکہ کا جیو پولیٹیکل گیم بھی قرار دیا۔

واضح رہے کہ متحدہ عرب امارات کی جانب سے غزہ جنگ بندی کے حوالے سے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل میں پیش کی جانے والی قرارداد کو سلامتی کونسل کے مستقل رکن امریکا نے ویٹو کردیا تھا.15 رکنی سلامتی کونسل میں 13 ارکان نے اماراتی قرارداد کے حق میں ووٹ دیا جبکہ برطانیہ ووٹنگ کے عمل سے غیر حاضر رہا۔

دوسری جانب غزہ میں قتل عام کے خلاف لندن میں احتجاجی مظاہرہ کیا گیا، پورا لندن سڑکوں پر نکل آیا اور مظاہرین نے صیہونی حکومت اور قابض اسرائیلی افواج کے خلاف شدید نعرے بازی کی۔مظاہرین نے غزہ میں فوری جنگ بندی کا مطالبہ کرتے ہوئے امریکی حکومت کو صیہونی افواج کے قتل عام میں برابر کا شریک قرار دیا۔

یاد رہے کہ 7 اکتوبر سے اب تک غزہ میں اسرائیلی بمباری سے 17 ہزار سے زائد فلسطینی شہید ہوچکے ہیں۔

پسندیدہ مضامین

انٹرنیشنلغزہ پر صیہونی حملے جاری : 24 گھنٹوں میں مزید 297 سےزائد...