29.9 C
Karachi
Thursday, June 13, 2024

انتباہ! کراچی ڈی ایچ اے کے رہائشیوں کو سمندری طوفان بیپرجوئے سے نمٹنے کیلئے تیار رہنے کا مشورہ

ضرور جانیے

کراچی: (دنیا نیوز) بحیرہ عرب کے سمندری طوفان ‘بپرجوئے’ کے شہر کے قریب آنے کے پیش نظر ڈیفنس ہاؤسنگ اتھارٹی (ڈی ایچ اے) کے رہائشیوں کو احتیاطی تدابیر اختیار کرنے کا مشورہ دیا گیا ہے۔

گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران یہ سمندری طوفان انتہائی شدید سمندری طوفان (ای ایس سی ایس) کی شکل اختیار کر چکا ہے اور امکان ہے کہ 15 جون کی سہ پہر تک پاکستان/رن آف کچھ-انڈین گجرات کے ساحلوں کے درمیان جنوب مشرقی سندھ کی ساحلی پٹی سے ٹکرائے گا۔

بڑھتے ہوئے خطرے کے پیش نظر ڈی ایچ اے انتظامیہ نے اپنے رہائشیوں کو الرٹ کردیا ہے اور انہیں کسی بھی ہنگامی صورتحال سے نمٹنے کے لئے تیار رہنے کا مشورہ دیا ہے۔

ڈی ایچ اے کراچی کی جانب سے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر جاری بیان میں کہا گیا کہ ‘ہم اپنے رہائشیوں کو شدید سمندری طوفان ‘ایس سی ایس’ سے نمٹنے کے لیے تیار رہنے کا مشورہ دیتے ہیں۔

رہائشیوں کو ہدایت کی گئی ہے کہ وہ اپنے تہہ خانے کے داخلی دروازے اور کھڑکیوں کو محفوظ بنائیں تاکہ طوفانی پانی کو ان کے گھروں کو نقصان پہنچنے سے روکا جاسکے اور کسی بھی ہنگامی صورتحال کی صورت میں ڈی ایچ اے ہیلپ لائن 1092 پر کال کریں۔

ایڈوائزری

ایڈوائزری میں طوفان کے کسی بھی ناپسندیدہ نتائج سے بچنے کے لئے مندرجہ ذیل احتیاطی تدابیر بیان کی گئیں۔

تمام لازمی کھلی جگہوں کو کسی بھی خلاف ورزی سے پاک رکھا جائے تاکہ زیادہ پانی یا زیادہ پانی سے بچا جا سکے۔

مرکزی دروازوں پر نالوں کو اچھی طرح صاف کیا جانا چاہئے

تمام عمارتوں کی چھتوں کو عارضی / غیر مجاز تعمیرات اور مواد سے پاک رکھا جائے۔

ڈھانچے کو پہنچنے والے نقصان کو روکنے کے لئے چھت کا علاج کیا جانا چاہئے

تمام ننگے یا ڈھیلے برقی کنکشن محفوظ ہونا چاہئے

تمام اہم سوراخ اور پائپ وں کو صاف کیا جانا چاہئے

واضح رہے کہ ڈی ایچ اے سمیت ساحل کے قریب تمام علاقوں میں سی آر پی سی کی دفعہ 144 نافذ کردی گئی ہے جس کے تحت لوگوں کے ساحلوں پر جانے پر پابندی عائد کردی گئی ہے۔

علاوہ ازیں سی ویو روڈ کو بھی مقامی ریسٹورنٹ سے خیابان اتحاد تک بند کر دیا گیا ہے۔ خیابان مجاہد سے ٹریفک کو سروس روڈ کی طرف موڑا جا رہا ہے جبکہ خیابان اتحاد سے ٹریفک کو واپس خیابان سبا کی طرف موڑا جا رہا ہے۔

سمندری طوفان

حکومت آج سمندری طوفان بیپرجے کے پیش نظر سندھ کی ساحلی پٹی کے ساتھ انخلا مہم شروع کر رہی ہے۔

متعلقہ حکام کو ہدایت کی گئی ہے کہ وہ کل (13 جون) تک صوبائی ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی (پی ڈی ایم اے) کے تعاون سے انخلا کے منصوبے پر عمل درآمد کریں، جب طوفان کے ساحل سے ٹکرانے کا امکان ہے۔

بابا بھٹ، مبارک ولیج، ابراہیم حیدری ولیج، ہاربر اور ساحلی پٹی سے متصل دیگر نشیبی علاقوں اور دیہات کو انخلا کے منصوبے میں شامل کیا گیا ہے۔

اجلاس میں کیماڑی، ملیر، جنوبی اور کورنگی کے ڈپٹی کمشنرز کو ہدایت کی گئی کہ وہ ڈیڈ لائن تک مذکورہ علاقوں کے تمام رہائشیوں کو نکال کر محفوظ مقامات یا امدادی کیمپوں میں منتقل کرنے کو یقینی بنائیں۔

پسندیدہ مضامین

پاکستانانتباہ! کراچی ڈی ایچ اے کے رہائشیوں کو سمندری طوفان بیپرجوئے سے...