30.9 C
Karachi
Thursday, June 13, 2024

چینی بینک نے پاکستان کو 2.4 ارب ڈالر قرض دینے کا اعلان کر دیا

ضرور جانیے

ایکسپورٹ امپورٹ بینک آف چائنا (ایگزم) نے پاکستان کو 2.4 ارب ڈالر سے زائد کی رقم فراہم کی ہے جو پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم) کی زیر قیادت حکومت کے لیے راحت کا سانس ہے کیونکہ وہ اگلے سال پاکستان کے واجب الادا قرضوں کی ادائیگی وں کو پورا کرنا چاہتی ہے۔

وفاقی وزیر خزانہ اسحاق ڈار نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر اپنے پیغام میں کہا ہے کہ بینک نے یہ رقم آئندہ دو مالی سال کے لیے ادا کی ہے جس میں مالی سال 24 میں 1.2 ارب ڈالر اور مالی سال 25 میں اتنی ہی رقم شامل ہے۔

وزیر خزانہ، جن کی حکومت کی میعاد اگست میں ختم ہو رہی ہے، نے کہا، “پاکستان صرف دونوں سالوں میں سود کی ادائیگی کرے گا۔

اعلان

یہ ریلیف وزیر اعظم شہباز شریف کے اس اعلان کے ایک ہفتے بعد سامنے آیا ہے کہ اسی مالیاتی ادارے ایگزم بینک آف چائنا نے پاکستان کو 60 0 ملین ڈالر سے زیادہ کی امداد فراہم کی ہے۔

وزیر اعظم نے کہا تھا کہ یہ رقم ان پانچ ارب ڈالر سے زائد کے قرضوں کے علاوہ ہے جو پاکستان کے آہنی بھائی چین نے گزشتہ تین ماہ میں ادا کیے تھے۔

چین، سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات سمیت دوست ممالک کے فنڈز نے پاکستان کو خود مختار ڈیفالٹ سے بچنے اور بین الاقوامی مالیاتی فنڈ (آئی ایم ایف) کے ساتھ معاہدہ کرنے میں مدد کی ہے۔

آئی ایم ایف کے بورڈ نے 30 جون کو پاکستان کے لیے 3 ارب ڈالر کے اسٹینڈ بائی معاہدے کی منظوری دی تھی جس میں سے 1.2 ارب ڈالر ابتدائی طور پر جاری کیے گئے تھے جبکہ باقی دو جائزوں کے بعد فراہم کیے جائیں گے۔

پاکستان کے زرمبادلہ کے ذخائر 14 جولائی تک 9 ماہ کی بلند ترین سطح 8.7 ارب ڈالر تک پہنچ گئے جس کی وجہ دو طرفہ اور کثیر الجہتی شراکت داروں کی مالی معاونت ہے۔

پسندیدہ مضامین

کاروبارچینی بینک نے پاکستان کو 2.4 ارب ڈالر قرض دینے کا اعلان...