15.9 C
Karachi
Friday, February 23, 2024

شیریں مزاری کا کہنا ہے کہ پولیس نے ان کی بیٹی ایمان کو اغوا کر لیا ہے۔

ضرور جانیے

پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کی سابق سیاستدان شیریں مزاری نے کہا ہے کہ سادہ کپڑوں میں ملبوس پولیس اہلکار، جن میں خواتین اہلکار اور پیراٹروپرز شامل ہیں، ان کی بیٹی ایمان حذیر مزاری کو لے گئے۔

شیریں مزاری نے واقعے کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا کہ اہلکاروں نے ان کے گھر کا دروازہ توڑ کر ان کے گھر میں گھس کر دھاوا بول دیا۔ انہوں نے قانون نافذ کرنے والے اداروں کی راتوں رات کی کارروائی پر مایوسی کا اظہار کیا، جنہوں نے نہ صرف ان کی بیٹی کو گرفتار کیا بلکہ سیکیورٹی کیمرے، ایمان کا لیپ ٹاپ اور فون بھی ضبط کر لیا۔

شیریں مزاری نے انکشاف کیا کہ انہوں نے ان سے ان کے ارادے کے بارے میں پوچھا تو انہوں نے ایمان کو گھسیٹ لیا اور ان کے گھر کے ہر کونے کی تلاشی لی۔

اس نے بتایا کہ ایمان اس کے نائٹ ڈریس میں تھا۔ انہوں نے مزید کہا کہ انہوں نے ان کی بیٹی کی اس درخواست کو نظر انداز کر دیا کہ اسے رات کے کپڑے تبدیل کرنے کے لئے ایک لمحے کا وقت دیا جائے اور اسے لے گئے۔

ان کی تشویش میں اضافہ یہ ہے کہ آپریشن کے دوران وارنٹ گرفتاری کی عدم موجودگی ہے۔ انہوں نے کہا کہ سیکیورٹی اہلکاروں نے انہیں کوئی وارنٹ گرفتاری نہیں دکھایا۔

انہوں نے بتایا کہ چھاپے کے وقت گھر میں صرف دو خواتین رہ رہی تھیں۔

شیریں مزاری نے اس پورے واقعے کو قانونی گرفتاری کے بجائے ‘ریاستی فاشزم’ اور اغوا قرار دیا۔

پسندیدہ مضامین

پاکستانشیریں مزاری کا کہنا ہے کہ پولیس نے ان کی بیٹی ایمان...