29.9 C
Karachi
Sunday, May 19, 2024

پاکستان کو روسی خام تیل کی قیمت چینی کرنسی میں ادا کرنے کا امکان

ضرور جانیے

پاکستان کو روسی خام تیل کی قیمت چینی کرنسی میں ادا کرنے کا امکان.اسلام آباد-پاکستان روسی تیل کی قیمت چینی یوآن میں ادا کرے گا جس میں 7 لاکھ 50 ہزار بیرل خام تیل لے جانے والا ٹیسٹ کارگو جون میں لنگر انداز ہونے کا امکان ہے۔

وزارت توانائی کے ایک سینئر عہدیدار نے اخبار کو بتایا کہ یہ کارگو مئی کے آخر تک بھی پہنچ سکتا ہے۔

ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ پاکستان ممکنہ طور پر خام تیل کی قیمت چینی کرنسی میں ادا کرے گا اور بینک آف چائنا ٹرانزیکشنز کے لیے اپنا کردار ادا کرسکتا ہے۔

تاہم عہدیدار نے ادائیگی کے طریقہ کار اور درست رعایت کے بارے میں تفصیلات واضح الفاظ میں بتانے سے انکار کرتے ہوئے کہا کہ یہ ملک کے مفاد میں نہیں ہے اور بیچنے والا ماسکو سے براہ راست روسی تیل خریدنے والے دیگر ممالک کے ردعمل کے خوف سے اسے عام نہیں کرنا چاہتا ہے۔

روس ٹیسٹ کارگو

انہوں نے مزید کہا کہ روس ٹیسٹ کارگو میں یورال خام تیل فراہم کرے گا. اور ممکنہ طور پر پاکستان ریفائنری لمیٹڈ (پی آر ایل) کو روسی خام تیل کو صاف کرنے کا کام سونپا جائے گا۔

روسی خام تیل کا تجارتی تجزیہ پاکستان کی معیشت کے حق میں کیا گیا ہے. لیکن روسی تیل کو ریفائن کرنے کے بعد اس کی مزید جانچ پڑتال کی جائے گی۔

روسی تیل کی شپنگ لاگت کا تخمینہ بھی 15 ڈالر فی بیرل لگایا گیا ہے. لیکن اس کو حتمی شکل پاکستان کی بندرگاہ پر پہنچنے کے بعد دی جائے گی۔

دیگر ذرائع نے بتایا کہ پاکستان نے فی بیرل قیمت 50 سے 52 ڈالر کے قریب پہنچ گئی ہے. جبکہ جی 7 ممالک کی حد قیمت 60 ڈالر فی بیرل ہے۔

پاکستانی ریفائنریاں اے ڈی این او سی اور سعودی آرامکو سے طویل مدتی معاہدوں کے تحت 80 فیصد خام تیل درآمد کرتی رہی ہیں. اور بقیہ 20 فیصد میں طویل مدتی معاہدے پر جی ٹی جی کے تحت روسی تیل خریدنے کی گنجائش موجود ہے۔

لیکن حکومت بین الاقوامی مارکیٹ سے خام تیل خریدنے کے لئے کچھ رعایت رکھنے کو بھی ترجیح دے گی. کیونکہ خام تیل کی قیمت کم ہوسکتی ہے اور طویل مدتی معاہدوں کے تحت دستخط شدہ لاگت کو بھی نقصان پہنچ سکتا ہے۔

روسی تیل

انہوں نے کہا کہ پاکستان نے یوکرین کے خلاف جنگ کے تناظر میں روسی تیل پر جی 7 ممالک کی جانب سے عائد کردہ حد قیمت سے 10 ڈالر فی بیرل کم. یعنی روسی خام تیل کی قیمت میں 50 ڈالر فی بیرل کی رعایت حاصل کرنے کی خواہش کا اظہار کیا تھا۔

تاہم مخلوط حکومت کے سرکردہ رہنماؤں میں سے ایک نے کہا ہے کہ. جی ٹی جی معاہدے کے تحت روسی خام تیل 30 فیصد رعایت پر درآمد کرنے کا فیصلہ مطلوبہ ریلیف فراہم نہیں کرسکتا۔

پسندیدہ مضامین

کاروبارپاکستان کو روسی خام تیل کی قیمت چینی کرنسی میں ادا کرنے...