15.9 C
Karachi
Thursday, February 22, 2024

لاپتا افراد کی بازیابی سے متعلق پولیس اقدامات غیرسنجیدہ ہیں: سندھ ہائیکورٹ

ضرور جانیے

کراچی: سندھ ہائی کورٹ نے لاپتا افراد کی بازیابی کے لیے پولیس کے اقدامات کو بے بنیاد قرار دے دیا۔

سندھ ہائی کورٹ کے جسٹس نعمت اللہ پھلپوتو اور جسٹس خادم حسین تنیو نے لاپتہ افراد کی بازیابی سے متعلق درخواستوں کی سماعت کی جس میں پولیس کے تفتیشی افسر نے عدالت کو لاپتہ افراد کی بازیابی کے لیے اٹھائے گئے اقدامات سے آگاہ کیا۔

دوران سماعت عدالت نے کہا کہ لاپتہ افراد کی بازیابی سے متعلق پولیس کی کارروائیاں سنجیدہ نہیں ہیں، پولیس کا رویہ دیکھ کر بہت افسوس ہوتا ہے اور یہ انتہائی افسوسناک جگہ ہے۔

تفتیشی افسر نے عدالت کو بتایا کہ شہری کو کسی نے حراست میں نہیں لیا، وہ خود لاپتہ تھا، لاپتہ شہری ایک سیاسی جماعت کا کارکن تھا اور ذاتی دشمنی تھی۔

عدالت نے استفسار کیا کہ آپ کو کیسے پتہ چلا کہ شہری 2015 سے لاپتہ ہے، اب کہہ رہے ہیں کہ وہ کہیں چلا گیا ہے، لاپتہ شہری کا سراغ نہیں مل سکا۔ اس طرح کا بیان دینے پر آپ کے خلاف کارروائی ہونی چاہیے، اگر شہری خفیہ ہے تو اسے تلاش کرنا اور بھی آسان ہے۔

بعد ازاں عدالت نے دیگر شہریوں کی بازیابی سے متعلق 28 فروری کو رپورٹ بھی طلب کرلی۔

پسندیدہ مضامین

پاکستانلاپتا افراد کی بازیابی سے متعلق پولیس اقدامات غیرسنجیدہ ہیں: سندھ ہائیکورٹ