25.9 C
Karachi
Friday, April 19, 2024

پاک فوج کی قربانیاں دنیا کو محفوظ رکھتی ہیں، برطانوی سفیر

ضرور جانیے

پاکستان میں تعینات برطانوی ہائی کمشنر جین میریٹ نے دہشت گردی کے خلاف جنگ میں پاک فوج کی قربانیوں کو سراہتے ہوئے کہا ہے کہ مسلح افواج نے جو بھاری قیمت ادا کی ہے وہ نہ صرف ملک میں امن برقرار رکھنے بلکہ دنیا کو محفوظ رکھنے کے لیے ہے۔

برطانوی سفیر کا یہ عزم ہفتے کے روز جیو نیوز کے ساتھ ایک خصوصی انٹرویو کے دوران سامنے آیا جس میں انہوں نے کہا کہ پاکستان دہشت گردی کے خلاف جنگ میں فرنٹ لائن پر ہے اور ان کے ملک کا سب سے اہم اتحادی ہے۔

میریٹ نے کہا کہ دہشت گردی کے خلاف جنگ میں اپنی جانوں کا نذرانہ پیش کرنے والوں کے اہل خانہ کے ساتھ میری تعزیت ہے۔

سفیر نے کہا کہ تحریک طالبان پاکستان (ٹی ٹی پی) اور حقانی گروپ سمیت دیگر دہشت گرد تنظیمیں افغان سرزمین پر اپنی سرگرمیاں جاری رکھے ہوئے ہیں جو تشویش کا باعث ہے۔

طالبان کو ان کے خلاف کارروائی کرنی چاہیے۔ اگر انہیں دہشت گردی کی سرگرمیوں سے نہیں روکا گیا تو وہ نہ صرف پاکستان بلکہ پوری دنیا کے لیے خطرہ ہیں جیسا کہ سب نے نائن الیون پر دیکھا تھا۔

جنگ

انہوں نے مزید کہا کہ یوکرین اور روس کے درمیان جنگ برطانیہ کے ٹی وی چینلز پر سب سے زیادہ دیکھی گئی لیکن اس کا مطلب یہ نہیں ہے کہ “ہم افغانستان کے بارے میں بھول گئے ہیں۔ دنیا کی نظریں اب بھی افغانستان کے مسئلے اور صورت حال پر ہیں۔ برطانیہ اس بات پر کام کر رہا ہے کہ افغانستان میں طالبان حکومت کے ساتھ کس طرح مذاکرات کیے جائیں۔

دوحہ میں تمام فریقین نے طالبان کے ساتھ مذاکرات میں حصہ لیا۔ آدھے افغانستان میں انسانی صورتحال بالخصوص لڑکیوں اور خواتین کے حقوق کے فقدان پر تشویش ہے جس کے لیے ہم طالبان حکومت کے ساتھ مذاکرات جاری رکھیں گے۔

انہوں نے کہا کہ ہمیں بتایا گیا ہے کہ طالبان کی آمد سے افغانستان میں سیکیورٹی کی صورتحال بہتر ہوئی ہے اس لیے اس کی وجہ یہ ہے کہ طالبان افغان سیکیورٹی فورسز اور لوگوں پر حملے کرتے تھے جس سے سیکیورٹی کی صورتحال مزید خراب ہوئی۔ تاہم اہم پیش رفت یہ ہے کہ طالبان کے دور حکومت میں ہیروئن کی کاشت میں بہت زیادہ کمی آئی ہے جس سے دنیا بھر کے نوجوانوں کی زندگیاں تباہ ہو رہی تھیں۔ ان کی کوششوں کو تسلیم کیا جانا چاہیے۔

مزید برآں یوکرین کی بحالی کے حوالے سے میریٹ کا کہنا تھا کہ پاکستان میں تعمیراتی کمپنیاں جنگ زدہ ملک کی تعمیر نو میں اہم کردار ادا کر سکتی ہیں اور اس کی مکمل حمایت کی جائے گی۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان میں ہنر مند مزدوروں کی ایک بڑی تعداد موجود ہے جو یوکرین کی تعمیر نو کے لئے وہاں کام کر سکتے ہیں۔ روس نے ڈیڑھ سال قبل یوکرین پر حملہ کیا تھا۔

ہولناک تصاویر

یوکرین پر روس کی بمباری اور جنگی قیدیوں کے ساتھ سلوک کی ہولناک تصاویر سب نے دیکھی ہیں۔ روس ایک برا ملک ہے جس نے اپنے چھوٹے سے پڑوسی پر حملہ کیا۔ مغرب ایک آزاد ملک کی حیثیت سے یوکرین کی حمایت جاری رکھے گا۔ یوکرین نے کبھی روس پر حملہ کرنے کے بارے میں نہیں سوچا۔ جنگ اس وقت شروع ہوئی جب روس نے یوکرین پر حملہ کیا۔

مزید برآں ایک سوال کے جواب میں میریٹ کا کہنا تھا کہ موسمیاتی تبدیلی کو نظر انداز نہیں کیا جا سکتا۔

انہوں نے کہا کہ موسمیاتی تبدیلی کے حوالے سے پاکستان کا موقف انتہائی نازک ہے جس کا ثبوت سیلاب ہے۔ برطانیہ نے صنعتی انقلاب دیکھا ہے، لہذا اسے موسمیاتی تبدیلی سے ہونے والے نقصان کو کم سے کم کرنے کے لئے دنیا کے ساتھ مل کر کام کرنا ہوگا. آب و ہوا کی تبدیلی سے نمٹنے کے لئے پوری دنیا میں پیسے کی ضرورت ہوتی ہے۔ اس سلسلے میں برطانیہ نجی سرمایہ کاروں کے ذریعے بین الاقوامی موسمیاتی فنانسنگ میں پاکستان کی مکمل حمایت کرے گا۔

سفیر نے مزید کہا کہ پاکستان اور برطانیہ کے درمیان تجارت کا موجودہ حجم 4.4 ارب پاؤنڈ (1672 ارب روپے) ہے جو ایک بہت بڑی رقم ہے۔

میریٹ کا کہنا تھا کہ پاکستان اور برطانیہ ایک دوسرے کی ضروریات کو سمجھتے ہیں جس کی وجہ سے ہم اچھے تجارتی شراکت دار بن تے ہیں۔

پسندیدہ مضامین

پاکستانپاک فوج کی قربانیاں دنیا کو محفوظ رکھتی ہیں، برطانوی سفیر