23.9 C
Karachi
Tuesday, February 27, 2024

پاکستان اور ایران کا ایک دوسرے کی سلامتی اور خودمختاری کے احترام کو یقینی بنانے پر اتفاق

ضرور جانیے

پاکستان اور ایران کے وزرائے خارجہ کے درمیان مذاکرات میں دونوں ممالک کی سلامتی اور خودمختاری کے احترام کو یقینی بنانے پر اتفاق کیا گیا ہے۔

نگران وزیر خارجہ جلیل عباس جیلانی نے اسلام آباد میں اپنے ایرانی ہم منصب کے ساتھ مشترکہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ ایران پاکستان کا دوست اور ہمسایہ ہے اور ایرانی وفد کے ساتھ دیرینہ ثقافتی، مذہبی اور برادرانہ تعلقات ہیں۔ ملاقات میں باہمی دلچسپی کے مختلف امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

نگران وزیر خارجہ نے کہا کہ ایران اور پاکستان کے درمیان مضبوط تعلقات دونوں ممالک کی ترقی کے لیے اہم ہیں۔ اقدامات کی ضرورت ہے اور دہشت گردوں کے خلاف ایک مضبوط حکمت عملی کی ضرورت ہے۔

جلیل عباس جیلانی نے کہا کہ اعلیٰ سطحی ایجنڈا پاکستان اور ایران کے مفاد میں ہے۔ ہم نے ایران کے صدر کو انتخابات کے فورا بعد پاکستان کا دورہ کرنے کی دعوت دی ہے۔ جی ہاں، یہ اعلیٰ سطحی مشاورتی طریقہ کار دونوں ممالک کے وزرائے خارجہ کے درمیان ہوگا۔

اس موقع پر ایرانی وزیر خارجہ امیر عبداللہیان نے کہا کہ پاکستان کے ساتھ اہم برادرانہ تعلقات ہیں، پاکستان کے ساتھ جغرافیائی تعلقات بھی اہم ہیں، ہم ایران اور پاکستان کے عوام کو ایک قوم سمجھتے ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ پاکستان کی سلامتی ہماری ترجیح ہے، دہشت گردوں نے ایران کو بہت نقصان پہنچایا ہے، ایران اور پاکستان دہشت گردوں کو کوئی موقع نہیں دیں گے، مشترکہ سرحد پر موجود دہشت گرد دونوں ممالک کی سلامتی کے لیے خطرہ ہیں۔

امیر عبداللہیان نے کہا کہ ہم پاکستان کی سلامتی کو ایران اور خطے کی سلامتی کے طور پر دیکھتے ہیں۔ پاکستان اور ایران میں دہشت گردی سے بہت سے لوگ شہید ہو چکے ہیں۔ بلاشبہ مشترکہ سرحد پر موجود دہشت گرد پاکستان اور ایران میں کارروائیاں کرتے ہیں۔ وہ تیسرے ممالک کی طرف سے پاکستان اور ایران میں دہشت گردی کرتے ہیں۔

پسندیدہ مضامین

پاکستانپاکستان اور ایران کا ایک دوسرے کی سلامتی اور خودمختاری کے احترام...