29.9 C
Karachi
Sunday, May 19, 2024

پاک سوزوکی نے موٹر سائیکل پلانٹ کی بندش میں مزید ایک ہفتے کی توسیع کردی

ضرور جانیے

کراچی: پاک سوزوکی موٹر کمپنی لمیٹڈ نے اپنے موٹر سائیکل پلانٹ کی بندش میں مزید ایک ہفتے کی توسیع کا اعلان کردیا۔

کمپنی نے پہلے پلانٹ میں 23 مئی سے 10 جون تک غیر پیداواری دنوں کا اعلان کیا تھا لیکن اب اس میں 16 جون تک توسیع کردی گئی ہے۔

یہ فیصلہ خام مال کی مسلسل قلت کے نتیجے میں سامنے آیا جس کی اطلاع پاکستان اسٹاک ایکسچینج کو جاری ہونے والے ایک بیان میں دی گئی۔

انوینٹری لیول کی کمی کی وجہ سے کمپنی کی انتظامیہ نے 12 جون 2023 سے 16 جون 2023 تک موٹر سائیکل پلانٹ بند کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ پی ایس ایم سی کے کمپنی سیکریٹری عبدالناصر نے نوٹس میں کہا کہ آٹوموبائل پلانٹ کام کرتا رہے گا۔

شٹ ڈاؤن

حالیہ شٹ ڈاؤن مئی میں ہونے والی بندش کے بعد ہوا تھا، جہاں موٹر سائیکل اور آٹوموبائل دونوں پلانٹس ایک ہفتے سے زیادہ عرصے تک بند رہے تھے۔

خام مال کی جاری قلت گزشتہ سال جولائی سے کمپنی کو پریشان کر رہی ہے، جس کی بنیادی وجہ ضروری اجزاء کی درآمد میں رکاوٹیں ہیں، جس کی وجہ ملکی زرمبادلہ کے ذخائر میں کمی ہے۔

پاک سوزوکی واحد آٹوموٹو مینوفیکچرر نہیں ہے جو اس طرح کی رکاوٹوں کا سامنا کر رہا ہے۔ انڈس موٹر کمپنی، جو پاکستان میں ٹویوٹا کاریں بنانے کی ذمہ دار ہے، کے ساتھ ساتھ ہونڈا اٹلس کارز کو بھی حالیہ مہینوں میں اہم خام مال کی عدم دستیابی کی وجہ سے متعدد شٹ ڈاؤن کا سامنا کرنا پڑا ہے۔

قلت نے آٹوموٹو پارٹس مینوفیکچررز کو بھی متاثر کیا ہے ، جس کی وجہ سے انہیں عارضی طور پر اپنی پیداواری لائنوں کو روکنے پر مجبور ہونا پڑا ہے۔

شٹ ڈاؤن کا اثر خود کمپنیوں سے کہیں زیادہ پھیلا ہوا ہے۔ دیگر صنعتوں کے ساتھ ساتھ پورا آٹوموبائل سیکٹر غیر پیداواری دنوں سے دوچار ہے جس کی وجہ لیٹر آف کریڈٹ کھولنے میں تاخیر کی وجہ سے خام مال کی درآمدات میں خلل ہے۔

پیداواری صلاحیت

اس کے نتیجے میں آپریشنل صلاحیتوں میں کمی آئی ہے اور معیشت کے متعدد شعبوں میں مجموعی طور پر پیداواری صلاحیت میں کمی واقع ہوئی ہے۔

پاک سوزوکی کی حالیہ بندش کی خبر نے ملازمین، اسٹیک ہولڈرز اور عام لوگوں میں تشویش پیدا کردی ہے۔ موٹر سائیکل پلانٹ، کمپنی کے اندر ایک اہم ڈویژن، ملک میں ایک اہم آجر ہے.

اس بندش سے کمپنی کی افرادی قوت اور مجموعی معیشت دونوں پر کافی اثر پڑنے کا خدشہ ہے۔ ایک تجزیہ کار کا کہنا ہے کہ موٹر سائیکل پلانٹ کی بندش نے پاکستان میں آٹوموٹو انڈسٹری کو درپیش وسیع تر مسائل کی واضح یاد دہانی کرائی ہے۔

انہوں نے اسٹیک ہولڈرز اور پالیسی سازوں پر زور دیا کہ وہ خام مال کی قلت کی بنیادی وجوہات کو دور کرنے اور مستقبل میں رکاوٹوں کو روکنے کے لئے پائیدار حل پر عمل درآمد کے لئے مل کر کام کریں۔

پسندیدہ مضامین

کاروبارپاک سوزوکی نے موٹر سائیکل پلانٹ کی بندش میں مزید ایک ہفتے...