24.9 C
Karachi
Monday, March 4, 2024

دریائے ستلج میں سیلاب سے ایک شخص ہلاک، 4805 افراد کو محفوظ مقامات پر منتقل کر دیا گیا

ضرور جانیے

بہاولنگر دریائے ستلج کے آس پاس کے 21 اضلاع کے 53 ہزار سے زائد افراد کو فوری طور پر دریائی پٹی خالی کرنے کی ہدایت کی گئی ہے۔

خطرناک حد تک پانی کی سطح بلند ہونے کی وجہ سے ندی میں اچانک سیلاب نے اب تک کم از کم ایک شخص کی جان لے لی ہے۔ بیلی کلاں کا رہائشی فیض احمد ہتھر کے علاقے سے مویشیوں کو چرانے کے دوران ڈوب کر جاں بحق ہوگیا۔ ریسکیو اہلکاروں نے اس کی لاش نکال لی۔

نیشنل ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی (این ڈی ایم اے) اور صوبائی ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی (پی ڈی ایم اے) کی جانب سے جاری کردہ حالیہ وارننگ کے پیش نظر ہفتہ کے روز لالیکا، چاویکا، وزیرکا، کوٹ مخدوم، بونگا احسان، کاکو بوڈلا، پیر سکندر، کالیا شاہ، جودھیکا اور دیگر قریبی علاقوں سے لوگوں کو نکالنے کا سلسلہ جاری رہا۔ یہ رپورٹ درج ہونے تک تقریبا 4805 لوگوں کو محفوظ مقامات پر منتقل کیا جا چکا تھا۔

پاک فوج

ضلعی انتظامیہ نے دریائی پٹی پر امدادی کاموں کے لیے پاک فوج سے مدد طلب کی ہے۔

پنجاب پی ڈی ایم اے کے ترجمان نے ایکسپریس نیوز کو بتایا کہ دریائے ستلج کا گنڈا سنگھ والا پوائنٹ انتہائی شدید سیلاب کی حالت میں ہے اور وہاں 2 لاکھ 78 ہزار کیوسک پانی بہہ رہا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ پانی کی سطح 23 فٹ تک پہنچ گئی ہے۔

انہوں نے کہا کہ بھارتی سرحد کے قریب اوکاڑہ کے سلیمانکی ہیڈ ورکس سے تقریبا 80 ہزار کیوسک پانی بہہ رہا ہے۔

ترجمان پی ڈی ایم اے کے مطابق بھارت کی جانب سے 21 اگست 2023 تک ہر روز دریا میں پانی چھوڑنے کی اطلاع ہے۔ انہوں نے کہا کہ پانی کی بڑھتی ہوئی سطح نے دریا کے کنارے موجودہ ڈیم کے ڈھانچے کو خطرے میں ڈال دیا ہے اور آس پاس کے گاؤوں کے لئے فوری خطرہ پیدا کر دیا ہے، انہوں نے مزید کہا کہ منگلا ڈیم میں پانی کی سطح خطرناک حد تک بلند ہے۔

صوبائی واٹر اینڈ پاور ڈویلپمنٹ اتھارٹی (واپڈا) کے مطابق ڈیم میں جمع ہونے والا پانی اپنی زیادہ سے زیادہ سطح 1242 فٹ تک پہنچ گیا۔

دیگر دو بڑے آبی ذخائر تربیلا اور چشمہ بھی اپنی زیادہ سے زیادہ سطح تک بھر گئے ہیں۔

این ڈی ایم اے

اس سے قبل این ڈی ایم اے نے گنڈا سنگھ والا پوائنٹ پر پانی کی سطح بڑھنے کی وارننگ جاری کی تھی۔

ایڈوائزری میں کہا گیا ہے کہ فلڈ فورکاسٹنگ ڈویژن (ایف ایف ڈی)، محکمہ موسمیات (پی ایم ڈی) اور پاکستان کمشنر برائے انڈس واٹرز (پی سی آئی ڈبلیو) سے موصول ہونے والے پانی کے بہاؤ کے اعداد و شمار کے مطابق دریا میں پانی کا بہاؤ اگلے 24 سے 48 گھنٹوں تک جاری رہے گا۔

اس میں مزید کہا گیا ہے کہ اگلے 48 سے 76 گھنٹوں میں بہاؤ کی عکاسی کی جائے گی اور اسے سلیمانکی اور اسلام ہیڈ ورکس تک پہنچایا جائے گا۔

دریائے ستلج سے ملحقہ علاقوں کو درپیش ممکنہ خطرات کے پیش نظر این ڈی ایم اے نے فیڈرل فلڈ کمیشن (ایف ایف سی) کو مشورہ دیا تھا کہ وہ آبی ذخائر، بیراجوں، ہیڈ ورکس اور آبپاشی نہروں کے انتظام کے ذریعے تیاری اور تخفیف کے لئے ایک وسیع کوآرڈینیشن میکانزم پر عمل درآمد کو یقینی بنائے۔

ایڈوائزری میں کہا گیا ہے کہ ان اقدامات میں تمام آبی ذخائر سے پانی کے اخراج کو یقینی بنانا چاہیے اور کسی بھی علاقے میں مجموعی طور پر سیلاب کو روکنے کے لیے ڈھانچے کو ریگولیٹ کرنا چاہیے۔

پسندیدہ مضامین

پاکستاندریائے ستلج میں سیلاب سے ایک شخص ہلاک، 4805 افراد کو محفوظ...