25.9 C
Karachi
Friday, April 19, 2024

بجلی بلوں میں ریلیف پر پیشرفت نہ ہو سکی، آئی ایم ایف کا صنعتوں سے مراعات واپس لینے کا مطالبہ

ضرور جانیے

بجلی کے بلوں پر ریلیف کے معاملے پر وزارت خزانہ، وزارت توانائی اور بین الاقوامی مالیاتی فنڈ (آئی ایم ایف) کے درمیان کوئی پیش رفت نہیں ہوسکی۔

ذرائع کے مطابق آئی ایم ایف نے پاکستان سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ خود پیدا کرنے والی صنعتوں کو دی جانے والی مراعات واپس لے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ آئی ایم ایف نے بجلی پیدا کرنے والی صنعتوں کے لیے گیس کے نرخوں میں فوری اضافے کا مطالبہ کیا ہے، بجلی پیدا کرنے والی صنعتوں کے لیے گیس کے نرخوں میں اضافے کا اطلاق جولائی 2023 سے کیا جائے۔

آئی ایم ایف نے حکومت پاکستان سے مطالبہ کیا ہے کہ بجلی پیدا کرنے والی صنعتوں کے لیے سبسڈی والے ٹیرف ختم کرکے نرخوں میں اضافے کا منصوبہ پیش کیا جائے۔

ذرائع کے مطابق آئی ایم ایف کا یہ بھی مطالبہ ہے کہ صارفین کو ریلیف دینے کے لیے پاور سیکٹر کا نظام ٹھیک کیا جائے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ بجلی کے بلوں پر ریلیف پلان کی آئی ایم ایف شرائط پر عملدرآمد کے لیے وقت مانگا گیا ہے۔

یاد رہے کہ حکومت پاکستان نے بجلی کے بھاری بلوں میں ریلیف کے لیے آئی ایم ایف سے رابطہ کیا تھا تاہم آئی ایم ایف نے اس حوالے سے پاکستان سے تحریری پلان کی درخواست کی تھی۔ بھی پیش کیا گیا تھا.

پسندیدہ مضامین

پاکستانبجلی بلوں میں ریلیف پر پیشرفت نہ ہو سکی، آئی ایم ایف...