29.9 C
Karachi
Saturday, February 24, 2024

مسلم لیگ (ن) کی حنا پرویز بٹ کا حملہ کرنے والوں پر کارروائی کا فیصلہ

ضرور جانیے

پاکستان مسلم لیگ (ن) کی رہنما حنا پرویز بٹ نے لندن میں ہونے والے حملے کا معاملہ پولیس کے سامنے اٹھانے اور ہراساں کرنے والوں کے خلاف فرد جرم عائد کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

سابق رکن پارلیمنٹ کو ممکنہ طور پر پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے حامیوں کے ایک گروپ کی جانب سے ہراسانی کا سامنا کرنا پڑا، جنہوں نے لندن میں ایک نجی خاندانی دورے کے دوران ان پر طنز کیا اور ان کے ساتھ بدسلوکی کی۔

واقعے کی ویڈیو میں حملہ آوروں کو بوتل پھینکتے اور بٹ کو گالیاں دیتے ہوئے دکھایا گیا ہے جس کی ٹوئٹر صارفین نے شدید مذمت کی ہے۔

مسلم لیگ (ن) کے رہنما نے واقعے کے خلاف قانونی کارروائی کا فیصلہ کیا ہے۔

واضح رہے کہ جب ان پر حملہ کیا گیا تو بٹ اپنے بیٹے کے ساتھ تھیں۔

واقعے کی ایک اور ویڈیو میں ہجوم میں شامل ایک شخص کو پی ٹی آئی کا جھنڈا تھامے اور بٹ کو گالیاں دیتے ہوئے دیکھا جاسکتا ہے جبکہ ان کا بیٹا واضح طور پر پریشان تھا۔

ٹوئٹرپیغام

سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر اپنے پیغام میں عائشہ بٹ نے لکھا کہ ‘پی ٹی آئی کے بدتمیز اور بدتمیز لوگ لندن میں میرے بیٹے کے سامنے مجھ پر حملہ کرنے، مجھ پر بوتلیں پھینکنے اور گالیاں دینے کی حد تک گر گئے ہیں۔

کیا یہ غیر مہذب لوگ پاکستان کا نام روشن کر رہے ہیں یا اسے بدنام کر رہے ہیں؟

جیسے ہی یہ ویڈیو وائرل ہوئی، سوشل میڈیا پر اس کی مذمت کی گئی اور اس عمل کو قابل مذمت قرار دیا گیا۔ بہت سے صارفین نے محسوس کیا کہ لوگوں کی سیاسی شکایات کے باوجود ، اس طرح کی کارروائیاں چیزوں کو بہت دور لے جارہی ہیں۔

مائیکرو بلاگنگ سائٹ پر سیاستدانوں اور صحافیوں سمیت متعدد صارفین نے اس واقعے کی شدید مذمت کی ہے۔

یہ پہلا موقع نہیں ہے جب اس طرح کا واقعہ پیش آیا ہے، اس سے قبل سابق وزیر اطلاعات مریم اورنگزیب کو بھی گزشتہ سال ستمبر میں ایک کافی شاپ میں ہراساں کیا گیا تھا۔

سابق وزیر منصوبہ بندی احسن اقبال کو بھی پی ٹی آئی کے حامیوں کے ہاتھوں اسی طرح کے سلوک کا سامنا کرنا پڑا۔

پسندیدہ مضامین

پاکستانمسلم لیگ (ن) کی حنا پرویز بٹ کا حملہ کرنے والوں پر...