23.9 C
Karachi
Tuesday, February 27, 2024

پنجاب کے 11 شہروں میں 67 ہزار سے زائد امیدوار ایم ڈی سی اے ٹی میں حصہ لیں گے

ضرور جانیے

لاہور-یونیورسٹی آف ہیلتھ سائنسز (یو ایچ ایس) کے زیر اہتمام میڈیکل اینڈ ڈینٹل کالج داخلہ ٹیسٹ (ایم ڈی سی اے ٹی) آج صوبے کے 11 شہروں میں قائم 29 مراکز میں منعقد ہوگا۔ 67 ہزار سے زائد امیدوار داخلہ ٹیسٹ دیں گے۔

پرچے اور دیگر حساس امتحانی مواد جمعہ کے روز سخت حفاظتی انتظامات کے تحت مختلف شہروں میں روانہ کیا گیا تھا۔ امتحانی پرچے سیل بند سٹیل ڈنڈوں میں رکھے گئے تھے۔

یو ایچ ایس کے وائس چانسلر پروفیسر احسن وحید راٹھور نے تمام انتظامات کی نگرانی کی۔

لاہور میں 19 ہزار، ملتان میں 13 ہزار 600، گوجرانوالہ میں 4 ہزار، بہاولپور میں 5 ہزار، فیصل آباد میں 7 ہزار 500، ڈی جی خان میں 3 ہزار، گجرات میں 1700، سرگودھا میں 3000، سیالکوٹ میں 2500، راولپنڈی میں 3300 اور ساہیوال میں 3700 امیدوار امتحان دیں گے۔

پنجاب حکومت نے تقریبا 5 ہزار سپروائزری اور انویجیلیشن اسٹاف تعینات کیا ہے جبکہ یو ایچ ایس نے یونیورسٹی کے سینئر فیکلٹی ممبران کو ہیڈ کوریئر اور کوریئر کے طور پر ٹیسٹ کے انعقاد کے لئے تعینات کیا ہے۔

امتحانات کی نگرانی

متعلقہ شہروں میں سرکاری طبی اداروں کے وائس چانسلرز، پرو وائس چانسلرز، پرنسپلز اور سینئر فیکلٹی ممبران امتحانات کی نگرانی کریں گے جبکہ سپیشلائزڈ ہیلتھ کیئر اینڈ میڈیکل ایجوکیشن ڈپارٹمنٹ کے افسران، ڈپٹی کمشنرز انتظامات کی نگرانی کریں گے۔

امتحانی مراکز میں غیر مجاز افراد کے داخلے کو روکنے کے لئے دفعہ 144 نافذ کردی گئی ہے۔

ایم ڈی سی اے ٹی کا امتحان صبح 10 بجے شروع ہوگا۔ امیدواروں کے لئے امتحانی مراکز صبح 8 بجے کھولے جائیں گے اور صبح 9 بجے سیل کردیئے جائیں گے جس کے بعد کسی کو بھی داخل ہونے کی اجازت نہیں ہوگی۔ امتحان کا دورانیہ ساڑھے تین گھنٹے ہوگا اور یہ دوپہر ڈیڑھ بجے ختم ہوگا۔

ایم بی بی ایس میں داخلے کے لئے کم از کم کوالیفائنگ مارکس 55 فیصد اور بی ڈی ایس کے لئے 50 فیصد ہیں۔ پاکستان میڈیکل اینڈ ڈینٹل کونسل (پی ایم اینڈ ڈی سی) کی جانب سے جاری کردہ نصاب کے مطابق پرچے میں بائیولوجی 68، کیمسٹری 54، فزکس 54، انگریزی 18 اور منطقی استدلال کے 6 سوالات شامل ہوں گے۔

اس سلسلے میں وائس چانسلر نے کہا کہ وزیراعلیٰ پنجاب نے تمام متعلقہ محکموں کو ہدایت کی ہے کہ وہ داخلہ ٹیسٹ کے ہموار اور بے عیب انعقاد کے لئے بھرپور انتظامات کریں۔

پروفیسر راٹھور نے کہا کہ ضلعی انتظامیہ نے متعلقہ ڈویژنل کمشنروں اور ڈپٹی کمشنروں کی نگرانی میں اپنے متعلقہ مراکز پر سیکورٹی اور لاجسٹک پلان کو حتمی شکل دے دی ہے۔

امتحانی مراکز

انہوں نے کہا کہ امتحانی مراکز پر پولیس اہلکاروں کی سیکیورٹی اور تعیناتی کے ذمہ دار ضلعی پولیس افسران ہوں گے۔

پولیس ٹیسٹ کے آغاز سے قبل علاقے میں وسیع پیمانے پر گشت اور تکنیکی صفائی کو یقینی بنائے گی۔ یو ایچ ایس کے وائس چانسلر نے بتایا کہ تمام بڑے مراکز پر واک تھرو گیٹس اور موبائل جیمرز لگائے جائیں گے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ٹریفک پولیس کو ہدایت کی گئی ہے کہ وہ ٹیسٹ سینٹرز کے قریب ٹریفک کی ہموار روانی کو یقینی بنانے کے لئے ٹریفک اور پارکنگ کے مناسب انتظامات کریں۔

پروفیسر راٹھور نے مزید کہا کہ تمام مراکز پر ایمرجنسی ہیلتھ کیئر سروسز کو یقینی بنایا جائے گا جس میں مکمل طور پر لیس ایمبولینسز، ڈاکٹرز کے ساتھ پیرا میڈیکل اسٹاف اور ضروری ادویات شامل ہوں گی۔ مزید برآں، قریبی ٹیچنگ اسپتال یا ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر اسپتال کو ہائی الرٹ پر رکھا جائے گا تاکہ کسی بھی ہنگامی صورتحال سے نمٹنے کے لئے تیار رہنے کو یقینی بنایا جاسکے۔

ٹیسٹ کے دوران تمام مراکز پر بلاتعطل بجلی کی فراہمی کو یقینی بنانے کے لئے بجلی فراہم کرنے والی کمپنیوں کے ساتھ بھی انتظامات کیے گئے ہیں۔

امیدواروں کو امتحانی مرکز میں کوئی سیل فون ، کیلکولیٹر ، اسمارٹ اور ڈیجیٹل گھڑیاں ، کتابیں ، بیگ اور الیکٹرانک آلات لانے کی اجازت نہیں ہے۔ تاہم ، اینالاگ گھڑیوں کی اجازت ہے۔

غیر منصفانہ

یو ایچ ایس وی سی نے متنبہ کیا کہ ٹیسٹ میں غیر منصفانہ ذرائع کے استعمال کے لئے صفر برداشت ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ امیدواروں کو اپنے داخلہ کارڈ کا پرنٹ آؤٹ اور اپنے اصل شناختی کارڈ / این آئی سی او پی / جے سی / پاسپورٹ / بی فارم ساتھ لانا ہوگا۔ انہوں نے مزید کہا کہ نادرا کی ٹیموں کی جانب سے ہر سینٹر پر امیدواروں کی بائیو میٹرک تصدیق کی جائے گی۔

دریں اثناء جمعہ کو محکمہ سپیشلائزڈ ہیلتھ کیئر اینڈ میڈیکل ایجوکیشن میں سیکرٹری صحت علی جان خان کی زیر صدارت ایک اجلاس منعقد ہوا جس میں محکمہ صحت کے تمام اسپیشل سیکرٹریز، ایڈیشنل سیکرٹریز اور ڈپٹی سیکرٹریز نے شرکت کی۔

اجلاس میں ایم ڈی سی اے ٹی امتحانات کے انتظامات کا جائزہ لیا گیا۔ امتحان کے دوران بہتر کوآرڈینیشن کے لئے محکمہ کے کمانڈ اینڈ کنٹرول سینٹر کو الرٹ کردیا گیا تھا۔

جناب علی جان خان نے کہا کہ ایم ڈی سی اے ٹی شاید محکمہ کی سال کی سب سے بڑی سرگرمی ہے لہذا انتظامات کے حوالے سے کسی بھی قسم کی کوتاہی برداشت نہیں کی جائے گی۔ سیکرٹری صحت نے کہا کہ امتحانی مراکز میں امیدواروں اور عملے کی جانب سے موبائل فون رکھنے پر سخت پابندی ہوگی۔

انہوں نے مزید کہا کہ محکمہ کے سینئر افسران کو ٹیسٹ کی نگرانی کے لئے تعینات کیا گیا ہے۔

پسندیدہ مضامین

پاکستانپنجاب کے 11 شہروں میں 67 ہزار سے زائد امیدوار ایم ڈی...