29.9 C
Karachi
Sunday, May 19, 2024

غزہ میں 44 روز سے اسرائیلی حملے جاری، 5500 بچوں سمیت 13 ہزار فلسطینی شہید

ضرور جانیے

غزہ میں اسرائیلی جارحیت 44 ویں روز بھی جاری ہے، بین الاقوامی جنگی قوانین کی خلاف ورزی کرتے ہوئے اسرائیلی افواج نے اندھا دھند حملوں میں شہری رہائشی علاقوں،

پناہ گزین کیمپوں، اسکولوں، اسپتالوں اور عبادت گاہوں کو نہیں بخشا۔ مساجد کو شہید کیا گیا، 7 اکتوبر سے اب تک اسرائیلی حملوں میں شہید ہونے والے فلسطینیوں کی تعداد 13 ہزار تک پہنچ گئی ہے۔

اسرائیلی فوج نے شمالی غزہ میں القسام مسجد، الخلیفہ مسجد، حیفہ مسجد اور الامین محمد مسجد کو شہید کردیا جبکہ جبالیہ کیمپ کے رہائشی بلاکس پر بھی گولہ باری کی گئی۔

اسرائیلی فوج نے گزشتہ رات کمال ادوان اسپتال پر بھی بم گرایا جس کے نتیجے میں نوزائیدہ بچے کا آئی سی یو تباہ اور ایک نوزائیدہ بچہ جاں بحق ہوگیا۔

اسرائیلی فورسز نے غزہ شہر میں حماس کے ٹھکانوں کو تباہ کرنے، اسلحہ قبضے میں لینے اور حماس کے عہدیداروں کے گھروں پر چھاپے مارنے کا بھی دعویٰ کیا ہے۔

31 نوزائیدہ بچوں کو الشفا ہسپتال سے نکال کر جنوبی غزہ کے امارات فیلڈ اسپتال لے جایا گیا تاہم 250 سے زائد مریض اور 25 ہیلتھ ورکرز اب بھی اسپتال میں پھنسے ہوئے ہیں۔

دریں اثنا مغربی کنارے میں اسرائیلی فوج کی کارروائیاں جاری ہیں، گزشتہ دو روز میں مزید 50 فلسطینی شہید ہوئے۔

دوسری جانب 7 اکتوبر سے اب تک فلسطینی مزاحمتی تنظیم حماس کے ساتھ جھڑپوں میں 380 اسرائیلی فوجی ہلاک ہو چکے ہیں جب کہ حزب اللہ نے بھی اسرائیلی علاقوں میں گولہ باری اور راکٹ حملے کیے ہیں۔ حالیہ حملوں میں اسرائیلی فوجیوں اور گاڑیوں کو نشانہ بنایا گیا ہے۔

سات اکتوبر سے اب تک غزہ میڈیا آفس پر اسرائیلی بمباری میں تیرہ ہزار فلسطینی شہید ہو چکے ہیں۔

غزہ میڈیا آفس کا کہنا ہے کہ شہید ہونے والوں میں ساڑھے پانچ ہزار بچے اور ساڑھے تین ہزار خواتین شامل ہیں جب کہ اسرائیلی بمباری سے زخمی ہونے والے فلسطینیوں کی تعداد 30 ہزار ہے۔

دوسری جانب اسرائیل نے غزہ کے محصور علاقے میں مزاحمتی تنظیموں کے جنگجوؤں کے ساتھ لڑائی میں مزید 2 اہلکاروں کی ہلاکت کی تصدیق کی ہے۔

اسرائیلی میڈیا رپورٹس کے مطابق اسرائیلی فوج کے ترجمان نے غزہ میں زمینی کارروائی کے دوران حماس کے جنگجوؤں کے ہاتھوں ہلاک ہونے والے مزید دو فوجیوں کے نام جاری کیے۔

اسرائیلی فوج کے ترجمان کے مطابق اتوار کے روز غزہ میں زمینی کارروائی کے دوران فرسٹ لیفٹیننٹ سمیت دو افسران ہلاک ہوگئے جس کے بعد دو روز میں سرکاری طور پر ہلاکتوں کی تعداد 13 ہوگئی ہے۔
واضح رہے کہ غزہ جنگ میں 7 اکتوبر سے اب تک 383 اسرائیلی فوجی ہلاک ہو چکے ہیں جب کہ 27 اکتوبر کو غزہ میں زمینی آپریشن شروع ہونے کے بعد سے اب تک 62 اسرائیلی فوجی ہلاک ہو چکے ہیں۔

دریں اثنا امریکی اخبار نے دعویٰ کیا ہے کہ اسرائیل اور حماس نے غزہ میں 5 روزہ جنگ بندی پر اتفاق کیا ہے۔

واشنگٹن پوسٹ کی رپورٹ کے مطابق فریقین نے یرغمالیوں کی رہائی کے بدلے غزہ میں 5 روزہ جنگ بندی پر اتفاق کیا ہے۔

امریکی اخبار کی رپورٹ میں اسرائیلی حکام کی جانب سے کسی قسم کا رد عمل سامنے نہیں آیا تاہم وائٹ ہاؤس کے ترجمان کی جانب سے جاری بیان میں اسرائیل اور حماس کے درمیان جنگ بندی کے معاہدے کی تردید کرتے ہوئے کہا گیا ہے کہ امریکا دونوں فریقوں کے درمیان ہے۔ معاہدے تک پہنچنے کی کوششیں جاری ہیں۔

پسندیدہ مضامین

انٹرنیشنلغزہ میں 44 روز سے اسرائیلی حملے جاری، 5500 بچوں سمیت 13...