29.9 C
Karachi
Saturday, February 24, 2024

پنجاب اسمبلی میں غیر قانونی بھرتیوں کا کیس، پرویز الٰہی پر فرد جرم عائد نہ ہوسکی

ضرور جانیے

لاہور: پنجاب اسمبلی میں غیر قانونی بھرتیوں کے کیس میں سابق وزیراعلیٰ پنجاب پرویز الٰہی اور دیگر پر فرد جرم عائد نہ ہوسکی۔

لاہور کی اینٹی کرپشن عدالت کے جج ارشد حسین نے پنجاب اسمبلی میں غیر قانونی بھرتیوں سے متعلق کیس کی سماعت کی جس میں پرویز الٰہی اپنے وکلا کے ہمراہ عدالت میں موجود تھے۔

سماعت کے دوران پرویز الٰہی نے جج سے کچھ دیر کمرہ عدالت میں رہنے کی اجازت مانگی۔ اس پر جج نے کہا کہ آپ عدالت میں رہیں لیکن یہاں کوئی چائے اور بسکٹ نہیں لائے گا، پچھلی بار بھی یہاں چائے اور بسکٹ پیش کیے گئے تھے۔

بعد ازاں عدالت نے دونوں ملزمان کی عدم پیشی کے باعث فرد جرم کی کارروائی ملتوی کردی اور ساتھ ہی تمام ملزمان کو آئندہ سماعت پر فرد جرم عائد کرنے کی کارروائی کے لیے طلب کرلیا۔

عدالت نے کیس کی مزید سماعت 12 فروری تک ملتوی کردی۔

دوسری جانب احتساب عدالت کے جج زبیر شہزاد کیانی نے ترقیاتی منصوبوں میں مبینہ کرپشن کے ریفرنس کی سماعت کی جس میں پرویز الٰہی اور دیگر ملزمان کو عدالت میں پیش کیا گیا۔

سماعت کے دوران عدالت نے ملزمان پر فرد جرم عائد کرنے کے لیے 14 فروری کی تاریخ مقرر کی جس کے دوران ملزمان میں ریفرنس کی کاپیاں تقسیم کی گئیں۔

عدالت نے پرویز الٰہی سمیت تمام ملزمان کو فرد جرم عائد کرنے کے لیے طلب کرلیا۔

پسندیدہ مضامین

پاکستانپنجاب اسمبلی میں غیر قانونی بھرتیوں کا کیس، پرویز الٰہی پر فرد...