30.9 C
Karachi
Tuesday, April 23, 2024

عمران خان کی زندگی خطرے میں ہے، بشریٰ بی بی

ضرور جانیے

اسلام آباد-سابق وزیراعظم عمران خان کی اہلیہ بشریٰ بی بی نے سپریم کورٹ میں جمع کرائے گئے حلف نامے میں دعویٰ کیا ہے کہ اٹک جیل میں ان کے شوہر کی زندگی کو خطرہ ہے۔

سابق خاتون اول نے فوجی عدالت میں شہریوں کے خلاف مقدمے کی سماعت سے متعلق کیس میں وکیل حامد خان کے توسط سے سپریم کورٹ میں حلف نامہ جمع کرایا۔

سابق وزیراعظم عمران خان کو اگست کے اوائل میں توشہ خانہ کیس میں تین سال قید کی سزا سنائی گئی تھی جو انہیں 2018-22 کے دور میں غیر ملکی شخصیات سے سرکاری تحائف کی فروخت سے متعلق تھا۔

نتیجتا انہیں پانچ سال کے لیے سیاست سے بھی روک دیا گیا۔

جمع کرائے گئے حلف نامے کے مطابق بشریٰ بی بی کو 22 اگست کو اٹک جیل میں عمران خان سے ملنے کی اجازت دی گئی تھی۔

بیان حلفی میں کہا گیا ہے کہ چیئرمین پی ٹی آئی کے بازو کے عضلات بھی بہت کمزور ہو گئے ہیں۔ ”۷۰ سال کی عمر میں یہ خطرناک ہے۔ یہ جان لیوا ہے۔

سابق وزیراعظم

حلف نامے میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ سابق وزیراعظم ملک کے لیے کسی بھی مشکل کا سامنا کرنے کے لیے تیار ہیں۔

18 اگست کو سابق خاتون اول نے جیل میں قید اپنے شوہر کی سلامتی اور حفاظت کے بارے میں تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا تھا کہ اٹک جیل میں انہیں زہر دیا جا سکتا ہے۔

سابق خاتون اول نے سیکریٹری داخلہ پنجاب کو لکھے گئے خط میں کہا ہے کہ عدالت نے ان کے شوہر کو راولپنڈی کی اڈیالہ جیل منتقل کرنے کا حکم دیا تھا۔

میرے شوہر کو بغیر کسی جواز کے اٹک جیل میں قید کر دیا گیا ہے۔ قانون کے مطابق میرے شوہر کو اڈیالہ جیل منتقل کیا جانا چاہیے۔

سابق وزیراعظم کی اہلیہ نے مطالبہ کیا کہ پی ٹی آئی کے سربراہ کو ان کی سماجی اور سیاسی حیثیت کے پیش نظر جیل میں بی کلاس سہولیات فراہم کی جائیں کیونکہ وہ آکسفورڈ گریجویٹ اور قومی کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ اٹک جیل میں ایسی سہولیات دستیاب نہیں ہیں جن کے ان کے شوہر حقدار ہیں۔

بشریٰ نے مزید کہا کہ ماضی میں عمران خان کی زندگی پر دو بار قاتلانہ حملے کیے گئے اور اس میں ملوث ملزمان کو ابھی تک گرفتار نہیں کیا گیا۔

انہوں نے خط میں کہا کہ عمران خان کی زندگی اب بھی خطرے میں ہے اور خدشہ ہے کہ میرے شوہر کو اٹک جیل میں زہر دے دیا جائے گا۔

انہوں نے کہا کہ ملک کی سابق وزیر اعظم ہونے کے ناطے ان کے شوہر کو جیل میں گھر کا پکا ہوا کھانا کھانے کی اجازت ہونی چاہیے۔

پسندیدہ مضامین

پاکستانعمران خان کی زندگی خطرے میں ہے، بشریٰ بی بی