30.9 C
Karachi
Tuesday, April 23, 2024

گیس سیکٹر کا گردشی قرضہ: آئی ایم ایف کا ڈیوڈینڈ پلگ ان بیک سکیم پر اختلاف برقرار

ضرور جانیے

اسلام آباد: گیس سیکٹر کا گردشی قرضہ 2700 ارب روپے تک پہنچ گیا ہے جبکہ آئی ایم ایف اور وزارت خزانہ گیس سیکٹر کے گردشی قرضوں کو کم کرنے کی اسکیم پر متفق نہ ہوسکے۔

آئی ایم ایف نے گیس سیکٹر کے گردشی قرضوں کو کم کرنے کے لیے ڈیویڈنڈ پلگ ان بیک اسکیم پر اختلاف کے باوجود وزارت خزانہ کو کوئی جواب نہیں دیا۔ اختلاف باقی ہے۔

ذرائع کے مطابق گیس سیکٹر کا گردشی قرضہ 2700 ارب روپے تک پہنچ گیا ہے، ڈیویڈنڈ پلگ ان بیک اسکیم کی منظوری سے گیس سیکٹر کے گردشی قرضوں میں 400 ارب روپے کی کمی کا منصوبہ ہے۔

وزارت خزانہ نے کہا ہے کہ آئی ایم ایف نے ڈیویڈنڈ پلگ ان بیک اسکیم کے مسودے پر کوئی جواب نہیں دیا، منصوبہ وزارت خزانہ اور وزارت توانائی نے آئی ایم ایف کی مشاورت سے تیار کیا تھا۔ کم کرنے کا منصوبہ تھا۔

او جی ڈی سی ایل پر ڈیویڈنڈ کی مد میں 260 ارب روپے سے زائد واجب الادا ہیں، پی پی ایل اور گورنمنٹ ہولڈنگ پرائیویٹ لمیٹڈ پر بھی 210 ارب روپے واجب الادا ہیں، سوئی ناردرن اور سوئی سدرن پر او جی ڈی سی، پی پی ایل پر 325 ارب روپے سے زائد واجب الادا ہیں۔

ذرائع کے مطابق سوئی ناردرن اور سوئی سدرن کو 125 ارب سے زائد جی ایچ پی ایل، سوئی ناردرن اور سوئی سدرن کو حکومت پاکستان کی جانب سے 410 ارب سے زائد کی ادائیگی کرنی ہے۔ روپے کم کرنے پڑے۔

پسندیدہ مضامین

کاروبارگیس سیکٹر کا گردشی قرضہ: آئی ایم ایف کا ڈیوڈینڈ پلگ ان...