29.9 C
Karachi
Saturday, February 24, 2024

نواز شریف کی نااہلی کے پیچھے سابق چیف جسٹس ثاقب نثار کا ہاتھ ہے: شہباز شریف

ضرور جانیے

لاہور: وزیراعظم شہباز شریف نے سابق چیف جسٹس آف پاکستان میاں ثاقب نثار پر الزام عائد کیا ہے کہ وہ نواز شریف کی نااہلی کے اصل معمار ہیں۔

سابق چیف جسٹس ثاقب نثار سازشی گروہ کے سرغنہ تھے۔ فیصل آباد کے قریب موٹروے تھری سے لنک روڈ کی تعمیر کا افتتاح کرتے ہوئے وزیراعظم شہباز شریف کا کہنا تھا کہ انہوں نے دوسروں کے ساتھ مل کر نواز شریف کو نااہل کرایا۔

انہوں نے ایک نجی ٹی وی چینل کو بتایا کہ فوجی تنصیبات پر حملوں میں ملوث افراد کے خلاف فوجی عدالتوں میں مقدمہ چلایا جائے گا۔

اگرچہ مسلم لیگ (ن) نواز شریف کی نااہلی میں مبینہ کردار پر سابق چیف جسٹس کو طویل عرصے سے تنقید کا نشانہ بنا رہی ہے۔

مقدمہ

دعویٰ ہے کہ مسلم لیگ (ن) کے سربراہ دوبارہ انتخاب لڑیں گے۔ فوجی تنصیبات پر حملہ کرنے والوں کے خلاف فوجی عدالتوں میں مقدمہ چلایا جانا تھا اور اب تک وہ صرف گردے اور جگر کے ہسپتال جیسے ترقیاتی منصوبوں کو از خود نوٹس کے ذریعے سبوتاژ کرنے پر تنقید کرتے رہے ہیں۔

اتوار کو اپنی تقریر میں وزیر اعظم شہباز شریف نے اپنی پارٹی کے ساتھیوں کے ساتھ مل کر سابق چیف جسٹس کو نواز شریف کی نااہلی کا ذمہ دار ٹھہرایا۔

انہوں نے اعلان کیا کہ اگر آئندہ انتخابات میں مسلم لیگ (ن) اقتدار میں آتی ہے تو نواز شریف وزیر اعظم کے عہدے کے لئے پارٹی کے امیدوار ہوں گے۔

انہوں نے وعدہ کیا کہ اگر مسلم لیگ (ن) کو پانچ سال کا مینڈیٹ دیا گیا تو وہ پاکستان کی تقدیر بدل دے گی اور ملک کو ترقی و خوشحالی کے سفر پر لے جائے گی۔

تاہم وزیر اعظم نے کہا کہ ان کی پارٹی عوام کے ووٹوں سے منتخب حکومت کا احترام کرے گی۔

انہوں نے یاد دلایا کہ مسلم لیگ (ن) کے لوگوں کو خصوصی طیارے کے ذریعے رات گئے بنی گالہ لے جا کر زبردستی دوسری طرف دھکیل دیا گیا اور پنجاب میں مسلم لیگ (ن) کی حکومت کی تشکیل میں رکاوٹیں کھڑی کی گئیں۔

چیئرمین عمران خان

انہوں نے افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے ملک کے لیے کوئی تعمیری کام کرنے کے بجائے چار سال تک چور اور ڈاکو کا منتر جاری رکھا۔

الزام عائد کیا کہ پی ٹی آئی کے سربراہ نے آئی ایم ایف معاہدے سے پیچھے ہٹنے کی سازش کی تاکہ آنے والی حکومت کے لیے مشکلات پیدا کی جا سکیں۔

بجلی کی قیمتوں میں اضافے کے فیصلے کا دفاع کرتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ یہ قدم آئی ایم ایف معاہدے کے تحت اٹھایا جانا تھا لیکن انہوں نے اعلان کیا کہ 200 یونٹ تک بجلی استعمال کرنے والوں کے لیے ٹیرف میں کوئی اضافہ نہیں کیا جائے گا۔

ریاست مخالف بدترین واقعہ

سماء ٹی وی کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے وزیر اعظم شہباز شریف نے کہا کہ 9 مئی کا بدترین ریاست مخالف واقعہ تھا، اس واقعے کو فروری 2019 کے بھارتی فضائی حملے سے تشبیہ دیتے ہیں۔

انہوں نے دعویٰ کیا کہ 9 مئی ملک کے اندر سے ایک سازش تھی جس کی قیادت پی ٹی آئی چیئرمین اور ان کے ساتھیوں نے کی تھی اور اس کی تیاریاں ایک سال سے زیادہ عرصے سے کی جارہی تھیں۔

انہوں نے کہا کہ حکومت اور ریاستی اداروں نے متفقہ طور پر فیصلہ کیا ہے کہ 9 مئی کو سویلین ڈھانچے پر حملے میں ملوث افراد کے خلاف سویلین عدالتوں میں مقدمہ چلایا جائے گا جبکہ فوجی تنصیبات میں ملوث افراد کے خلاف فوجی عدالتوں میں مقدمہ چلایا جائے گا اور کسی کو بھی بخشا نہیں جائے گا اور نہ ہی کسی رعایت کی پیش کش کی جائے گی۔

مجرموں کو مثالی سزائیں دی جائیں گی تاکہ دوسروں کو دوبارہ اس طرح کے گھناؤنے فعل میں ملوث ہونے سے روکا جاسکے۔

قبل ازیں فیصل آباد میں وزیراعظم نے کہا کہ عوام کو دھاندلی کے ذریعے اقتدار میں آنے والوں کو شکست دے کر 2018 کا بدلہ لینا ہوگا۔

انہوں نے کہا کہ انہوں نے قومی مفادات کے لئے اپنے سیاسی مفادات کو قربان کرنے کا فیصلہ کیا اور ملک کو ان بحرانوں سے نکالنے کی پوری کوشش کی جن میں پی ٹی آئی نے اسے دھکیلا تھا۔

انہوں نے کہا کہ اب ڈیفالٹ کا کوئی خطرہ نہیں ہے اور ملک مالی خطرے سے باہر ہے۔

پسندیدہ مضامین

پاکستاننواز شریف کی نااہلی کے پیچھے سابق چیف جسٹس ثاقب نثار کا...