29.9 C
Karachi
Thursday, June 13, 2024

مچھلی کے تیل کے سپلیمنٹس امراض قلب کا باعث بن سکتے ہیں، تحقیق

ضرور جانیے

لندن: مچھلی کے تیل کے سپلیمنٹس کو دل کے صحت مند اومیگا تھری فیٹی ایسڈز کا بہترین ذریعہ سمجھا جاتا ہے لیکن ایک حالیہ تحقیق سے پتہ چلتا ہے کہ یہ مکمل طور پر سچ نہیں ہے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق جرنل بی ایم ایل میڈیسن میں شائع ہونے والی ایک تحقیق میں بتایا گیا ہے کہ مچھلی کے تیل کے سپلیمنٹس کا باقاعدگی سے استعمال دل کی اچھی صحت رکھنے والے افراد میں بھی فالج اور بے ترتیب دل کی دھڑکن کا خطرہ بڑھا سکتا ہے۔

نیشنل جیوش ہیلتھ میں امراض قلب کے امراض کی روک تھام اور تندرستی کے ڈائریکٹر ڈاکٹر اینڈریو فری مین کا کہنا ہے کہ مچھلی کا تیل شاذ و نادر ہی تجویز کیا جاتا ہے اور پیشہ ورانہ طبی ہدایات میں اچھی طرح سے دستاویزی نہیں ہے۔ تاہم، زیادہ تر لوگ اب بھی اس کا استعمال کرتے ہیں.

اس تحقیق میں برطانیہ میں 40 سے 69 سال کی عمر کے 4 لاکھ 15 ہزار افراد کے اعداد و شمار کا تجزیہ کیا گیا جنہوں نے 12 سال تک باقاعدگی سے مچھلی کے تیل کے سپلیمنٹس لیے۔

محققین نے دریافت کیا کہ اچھی دل کی صحت والے افراد میں مچھلی کے تیل کے سپلیمنٹس کے باقاعدگی سے استعمال سے دل کی دھڑکن وں میں بے قاعدگی کا خطرہ 13 فیصد اور فالج کا خطرہ 5 فیصد کم ہوتا ہے۔

پسندیدہ مضامین

صحتمچھلی کے تیل کے سپلیمنٹس امراض قلب کا باعث بن سکتے ہیں،...