15.9 C
Karachi
Friday, February 23, 2024

پاکستان میں زلزلے کی پیشگوئی، محکمہ موسمیات کا مؤقف بھی سامنے آگیا

ضرور جانیے

محکمہ موسمیات کا کہنا ہے کہ یہ پیشگوئی کرنا ممکن نہیں کہ زلزلہ کہاں اور کب آئے گا۔

تفصیلات کے مطابق نیدرلینڈز کے سولر سسٹم جیومیٹری سروے کی پیشگوئی پر موقف دیتے ہوئے محکمہ موسمیات کا کہنا تھا کہ زمین کے اندر موجود 2 بڑی پلیٹوں کی حدود پاکستان سے گزرتی ہیں۔

سرحدیں سونمیانی سے لے کر پاکستان کے شمالی علاقے تک پھیلی ہوئی ہیں، ان سرحدی لائنوں میں کہیں بھی زلزلہ آ سکتا ہے۔

محکمہ موسمیات کے مطابق 1892 میں چمن فالٹ پر 9 سے 10 شدت کا زلزلہ آیا تھا۔ 1935 ء میں چلتن رینج میں زلزلہ آیا جس میں ہزاروں افراد ہلاک ہوئے۔

عام طور پر 100 سال کی مدت کے بعد سرحدی لائنوں میں دوبارہ زلزلوں کا امکان ہوتا ہے۔

یاد رہے کہ نیدرلینڈز کے سولر سسٹم جیومیٹری سروے نے آئندہ 48 گھنٹوں میں پاکستان میں طاقتور زلزلے کی پیش گوئی کی ہے جس کی شدت 6 یا اس سے زیادہ ہوسکتی ہے۔

سیسمولوجیکل ریسرچ انسٹی ٹیوٹ کے سولر سسٹم جیومیٹری سروے نے چمن فالٹ لائن کی نشاندہی انتہائی شدید ممکنہ زلزلوں کے علاقے کے طور پر کی ہے، جس میں سطح سمندر کے قریب فضا میں برقی چارج میں اتار چڑھاؤ کی اطلاع دی گئی ہے، جس کی وجہ سے نقشے پر جامنی علاقے بشمول بلوچستان شامل ہیں۔ آئندہ چند دنوں میں شدید زلزلہ آ سکتا ہے۔

یہ خبر وائرل ہوتے ہی ہر کوئی پریشان ہے کہ کیا واقعی پاکستان کو خوفناک زلزلے کا سامنا ہے۔

پسندیدہ مضامین

موسمپاکستان میں زلزلے کی پیشگوئی، محکمہ موسمیات کا مؤقف بھی سامنے آگیا