30.9 C
Karachi
Thursday, June 13, 2024

چیف جسٹس کے اختیارات کم کرنے کا بل پیش کرنے پر عمران خان کی حکومت پر تنقید

ضرور جانیے

چیف جسٹس کے اختیارات کم کرنے کا بل پیش کرنے پر عمران خان کی حکومت پر تنقید.عمران خان نے فرانس کی مثال دیتے ہوئے کہا کہ دنیا میں کہیں بھی پاکستان جیسی صورتحال نہیں ہے۔ فرانس کے عوام پنشن اصلاحات کے خلاف احتجاج کر رہے ہیں۔ لیکن فرانس کی پولیس نے گھروں سے ایک بھی شہری کو گرفتار نہیں کیا۔

اس سے قبل عمران خان نے کہا تھا کہ ان کی جماعت انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کو اجاگر کرنے کے لیے کراچی میں سیمینار منعقد کرے گی۔

پی ٹی آئی کراچی کے صدر آفتاب صدیقی نے معزول وزیراعظم سے ملاقات کی۔

ملاقات کے دوران اراکین اسمبلی ارسلان تاج اور شاہ نواز جدون بھی موجود تھے۔ صدیقی نے عمران خان کو کراچی میں پی ٹی آئی کو درپیش ‘سیاسی انتقام’ سے آگاہ کیا۔

عمران خان نے ارسلان تاج اور شاہ نواز جدون کے حوصلے بلند کیے جنہیں ‘سیاسی انتقام کا سامنا کرنا پڑا’۔

انتخابات کے حوالے سے عمران خان نے رہنماؤں کو اہم ٹاسک تفویض کیے اور کہا کہ سندھ میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کے خلاف سیمینارمنعقد کیے جائیں گے۔

انہوں نے اس سلسلے میں سیمینار سے جلد خطاب کرنے کے عزم کا بھی اظہار کیا۔

کراچی میں پی ٹی آئی کارکنوں کے گھروں پر چھاپے مارنا انسانی حقوق کی خلاف ورزی ہے۔

ملک کے آئین کی مسلسل خلاف ورزی کی جا رہی ہے۔

یہ بھی پڑھیں: پی ٹی آئی کا عوامی رابطہ مہم جاری رکھنے کا عزم

عمران خان نے کراچی میں پی ٹی آئی کارکنوں کی خدمات کو یاد کرتے ہوئے کہا کہ کراچی سے تعلق رکھنے والے پی ٹی آئی کارکنوں نے ہمیشہ ہماری حقیقی تحریک آزادی کو آگے بڑھانے میں اہم کردار ادا کیا ہے۔

میں تشدد کا سامنا کرنے کے باوجود پرعزم رہنے کے لئے کارکنوں کی ستائش کرنا چاہوں گا۔

دوسری جانب عمران خان نے کہا کہ وہ آئین کی بالادستی کے لیے آل پارٹیز کانفرنس (اے پی سی) کے تمام اجلاسوں میں شرکت کے لیے تیار ہیں۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے کونسل آف پاکستان نیوز پیپر ایڈیٹرز (سی پی این ای) کے صدر کاظم خان سے ملاقات کے دوران کیا اور وزیر داخلہ رانا ثناء اللہ کو تنقید کا نشانہ بنایا۔

انہوں نے دعویٰ کیا کہ رانا ثناء اللہ نے مجھ پر قاتلانہ حملے کی منصوبہ بندی میں اہم کردار ادا کیا تھا۔

انہوں نے کہا، ‘میں پہلے بھی باقی دو ذمہ داروں کے نام بتا چکا ہوں۔ ثناء اللہ سمیت تینوں نے مجھ پر قاتلانہ حملے کے سلسلے میں تحقیقات کو سبوتاژ کرنے میں کلیدی کردار ادا کیا تھا۔

رانا ثناء اللہ کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے عمران خان نے وزیر داخلہ کو بزدل قرار دیتے ہوئے دعویٰ کیا کہ وہ (ثناء اللہ) وزیر داخلہ نہیں بلکہ ‘دہشت گرد مافیا’ کے رکن ہیں۔ ثناء اللہ کے کردار کے بارے میں جاننے کے لیے بہتر ہے کہ عابد شیر علی کے والد سے پوچھا جائے۔

پنجاب اور خیبر پختونخوا میں انتخابات کے بارے میں بات کرتے ہوئے عمران خان نے کہا کہ اگر اپنے وقت میں انتخابات نہیں ہوں گے تو ایک بات کی تصدیق ہو جائے گی کہ ملک میں قانون کی حکمرانی نہیں ہے۔ انہوں نے پی ٹی آئی کے امیدواروں پر زور دیا کہ وہ 30 اپریل کے سلسلے میں عوامی رابطہ مہم جاری رکھیں۔

پاکستان مسلم لیگ (ن) کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے عمران خان نے دعویٰ کیا کہ مسلم لیگ (ن) نے دباؤ بڑھانے کے لیے عدلیہ کو نشانہ بنانے کے پرانے ہتھکنڈوں کا سہارا لیا۔

پسندیدہ مضامین

پاکستانچیف جسٹس کے اختیارات کم کرنے کا بل پیش کرنے پر عمران...