23.9 C
Karachi
Monday, March 4, 2024

بٹگرام کیبل کار کا مالک اور آپریٹر ‘غفلت’ کے الزام میں گرفتار

ضرور جانیے

خیبر پختونخوا کے علاقے بٹگرام میں گزشتہ روز 15 گھنٹے سے زائد عرصے تک 8 افراد کی زندگیوں کو خطرے میں ڈالنے والے گونڈولہ کے المناک واقعے کے سلسلے میں لاپرواہی برتنے پر پولیس نے کیبل کار آپریٹر اور اس کے مالک سمیت دو افراد کو گرفتار کرلیا۔

یہ واقعہ منگل کی صبح اس وقت پیش آیا جب کیبل کار میں سوار آٹھ مسافر اسکول جا رہے تھے۔ ٹرالی اس وقت آدھے راستے میں پھنس گئی جب اس کی دو تاریں ٹوٹ گئیں۔

بعد ازاں فوج نے کیبل کار میں سوار افراد کو بچانے کے لیے ایس ایس جی کے جنرل آفیسر کمانڈنگ (جی او سی) کی قیادت میں آپریشن شروع کیا۔ اعصاب شکن ریسکیو آپریشن کے بعد تمام آٹھ مسافروں کو پاک فوج کے کمانڈوز نے کامیابی کے ساتھ بچا لیا۔

دریں اثنا پولیس نے واقعے کی تحقیقات کا آغاز کرتے ہوئے کیبل کار کے کنٹرول روم کو سیل کردیا۔

ہزارہ ڈویژن کے ڈپٹی انسپکٹر جنرل آف پولیس کے مطابق ایف آئی آر میں غفلت سے متعلق پانچ الزامات شامل کیے گئے ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ اس سلسلے میں مزید تفتیش جاری ہے۔

تمام چیئر لفٹوں کے معائنے کا حکم

مستقبل میں اس طرح کے واقعات سے بچنے کے لئے، خیبر پختونخوا (کے پی) میں نگران حکومت نے صوبے میں نصب تمام چیئر لفٹوں کا معائنہ کرنے اور ان کا سیفٹی آڈٹ کرنے کا حکم دیا ہے۔

صوبائی حکام کی جانب سے یہ ہدایات پاک فوج کے اسپیشل یونٹ اور زپ لائن ماہرین کی جانب سے بٹگرام میں کیبل کار کے اندر پھنسے افراد کو نکالنے کے چند گھنٹوں بعد سامنے آئی ہیں۔

کے پی میں تمام ڈپٹی کمشنرز کو جاری کردہ تازہ ہدایات کے مطابق، انہیں اپنے دائرہ اختیار میں چیئر لفٹوں کا سیفٹی آڈٹ کرنے کی ذمہ داری سونپی گئی ہے۔

ایڈوائزری میں کہا گیا ہے کہ صوبائی حکومت تمام تجارتی، گھریلو اور تفریحی مقامات پر چیئر لفٹوں کی فوری چیکنگ کرے، دریاؤں اور نہروں پر نصب کیبل کاروں کا معائنہ بھی متعلقہ حکام کریں۔

ڈپٹی کمشنرز سے کہا گیا ہے کہ وہ تمام چیئر لفٹوں کے ڈیزائن، صلاحیت اور حفاظتی اقدامات کا جائزہ لیں اور ایک ہفتے کے اندر رپورٹ پیش کریں۔

کیبل کاروں کی تنصیب سے قبل ضلعی انتظامیہ سے این او سی حاصل کرنا بھی لازمی قرار دیا گیا ہے۔

پسندیدہ مضامین

پاکستانبٹگرام کیبل کار کا مالک اور آپریٹر 'غفلت' کے الزام میں گرفتار