29.9 C
Karachi
Thursday, June 13, 2024

پی ٹی آئی کی شکست کے بعد فضل الرحمان نواز شریف سے ملاقات کے لیے لندن روانہ

ضرور جانیے

جمعیت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان لندن روانہ ہو گئے ہیں۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ 9 مئی کو ہونے والے مظاہروں کے بعد پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کو بڑے پیمانے پر نقل مکانی اور پابندیوں کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے، ذرائع کا کہنا ہے کہ مولانا فضل الرحمان موجودہ صورتحال پر تبادلہ خیال کرنے کے لیے لندن میں پاکستان مسلم لیگ (ن) کے قائد نواز شریف سے ملاقات کریں گے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ جے یو آئی (ف) کے رہنما، جو سیاسی جماعتوں کے اتحاد پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم) کے سربراہ بھی ہیں، چند روز برطانیہ میں قیام کریں گے اور مختلف شہروں میں کام کرنے والے اپنے پارٹی کارکنوں سے ملاقات کریں گے۔

پی ٹی آئی کے چیئرمین عمران خان کی 9 مئی کو 190 ملین پاؤنڈ کے تصفیے کے کیس میں گرفتاری اور اس کے بعد ہونے والے پرتشدد مظاہروں، جس کے دوران بے قابو حامیوں اور کارکنوں نے تقریبا ملک بھر میں سرکاری تنصیبات پر دھاوا بول دیا اور آگ لگا دی، نے پارٹی رہنماؤں کو بڑے پیمانے پر پارٹی چھوڑنے کا موقع فراہم کیا ہے۔

فوجی تنصیبات

عمران خان کے قریبی ساتھیوں سمیت پی ٹی آئی کے کئی رہنماؤں نے 9 مئی کو توڑ پھوڑ کے بعد پارٹی چھوڑنے کا اعلان کیا ہے جبکہ کچھ نے فوجی تنصیبات پر حملوں کے لئے خان کی پالیسیوں کو مورد الزام ٹھہرایا ہے۔

پارٹی سندھ کے صدر علی زیدی نے سیاست سے کنارہ کشی اختیار کرنے کا اعلان کرتے ہوئے پارٹی عہدوں سے استعفیٰ دے دیا ہے۔

تقریبا تین روز تک جاری رہنے والے مظاہروں میں کم از کم آٹھ افراد ہلاک اور درجنوں زخمی ہوئے جبکہ موجودہ مخلوط حکومت نے امن و امان کی صورتحال کو برقرار رکھنے کے لیے انٹرنیٹ خدمات معطل کر دی ہیں اور فوجی دستوں کو تعینات کر دیا ہے۔

دفاع اور عوامی املاک پر بے مثال حملوں کے بعد توڑ پھوڑ میں ملوث مشتبہ شخص کو حراست میں لینے کے لیے پی ٹی آئی پر کریک ڈاؤن شروع کیا گیا تھا اور ملک کی اعلیٰ سول ملٹری قیادت نے آرمی ایکٹ سمیت ملک کے متعلقہ قوانین کے تحت فسادیوں کے خلاف مقدمہ چلانے کا عہد کیا تھا۔

پسندیدہ مضامین

پاکستانپی ٹی آئی کی شکست کے بعد فضل الرحمان نواز شریف سے...