29.9 C
Karachi
Saturday, February 24, 2024

کے پی میں دہشت گردوں کے ساتھ فائرنگ کے تبادلے میں فوج کے میجر سمیت 3 افراد شہید

ضرور جانیے

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے مطابق شمالی وزیرستان کے علاقے میران شاہ میں سیکیورٹی فورسز کی جانب سے انٹیلی جنس بیسڈ آپریشن کے دوران فوج کا ایک میجر اور ایک جوان شہید ہوگیا۔

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کا کہنا ہے کہ جب سیکیورٹی فورسز نے آپریشن شروع کیا تو دہشت گردوں کے ایک گروہ کو میجر عامر عزیز نے دیکھا اور روک لیا۔

فائرنگ کے تبادلے میں ایک دہشت گرد ہلاک جبکہ دوسرا زخمی ہوگیا۔

فائرنگ کے تبادلے میں 29 سالہ میجر عامر اور 27 سالہ سپاہی محمد عارف شہید ہوگئے۔

فوج کے میڈیا افیئرز ونگ کا کہنا ہے کہ علاقے میں موجود دہشت گردوں کے خاتمے کے لیے علاقے کی صفائی کی جا رہی ہے۔

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے مطابق پاکستان کی سیکیورٹی فورسز دہشت گردی کی لعنت کے خاتمے کے لیے پرعزم ہیں اور ہمارے جوانوں کی ایسی قربانیوں سے ہمارے عزم کو مزید تقویت ملتی ہے۔

تیراہ میں فائرنگ کا تبادلہ

میجر عزیز اور سپاہی عارف کی شہادت کی خبر آئی ایس پی آر کی جانب سے جاری کی گئی تھی جس میں بتایا گیا تھا کہ ضلع خیبر میں فائرنگ کے تبادلے میں ایک جوان شہید جبکہ ایک دہشت گرد مارا گیا۔

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے مطابق 31 اگست سے یکم ستمبر کی درمیانی شب ضلع خیبر کے علاقے تیراہ میں فوجی دستوں اور دہشت گردوں کے درمیان فائرنگ کا تبادلہ ہوا۔

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے مطابق فوجیوں نے دہشت گردوں کے ٹھکانے پر موثر کارروائی کی جس کے نتیجے میں ایک دہشت گرد ہلاک ہوا۔

ہلاک ہونے والا دہشت گرد سیکیورٹی فورسز کے خلاف متعدد دہشت گردی کی سرگرمیوں اور بے گناہ شہریوں کے قتل میں فعال طور پر ملوث رہا۔

شدید فائرنگ کے تبادلے کے دوران 36 سالہ حوالدار منتظر شاہ نے بہادری سے مقابلہ کرتے ہوئے جام شہادت نوش کیا۔

دہشت گرد قوم کو مجبور نہیں کر سکتے، جنرل منیر

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے مطابق آرمی چیف جنرل عاصم منیر نے کہا ہے کہ دہشت گردوں کے بزدلانہ ہتھکنڈوں سے قوم کو مجبور نہیں کیا جا سکتا۔

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے مطابق آرمی چیف نے یہ بات کے پی کے شہر بنوں کے دورے کے موقع پر کہی جہاں ایک روز قبل جانی خیل کے علاقے میں فوجی قافلے کے قریب ایک خودکش بمبار نے خود کو دھماکے سے اڑا دیا تھا جس کے نتیجے میں 9 جوان شہید ہوگئے تھے۔

آہنی عزم

جنرل منیر نے علاقے میں تعینات افسران اور جوانوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا، “فوج، قانون نافذ کرنے والے اداروں اور قوم کو دہشت گردوں کے بزدلانہ ہتھکنڈوں سے کبھی مجبور نہیں کیا جا سکتا، جن کا یہ غلط فہمی ہے کہ وہ فوجیوں کے آہنی عزم اور ریاست کی رٹ کو چیلنج کر سکتے ہیں۔

آرمی چیف نے مزید کہا کہ قوم نے طویل عرصے تک جنگ لڑی ہے اور آخر تک دہشت گردی کی لعنت کے خلاف لڑتی رہے گی۔

انہوں نے کہا کہ قوم اپنی جانوں کا نذرانہ پیش کرنے والوں کو زبردست خراج عقیدت پیش کرتی ہے اور ان کی قربانیوں کو ہمیشہ یاد رکھا جائے گا۔

پسندیدہ مضامین

پاکستانکے پی میں دہشت گردوں کے ساتھ فائرنگ کے تبادلے میں فوج...